کورکمانڈر کراچی کی رینجرز ہیڈ کوارٹرز آمد‘ نائن زیرو آپریشن پر شاباش دی‘ قانون کو مطلوب افراد نائن زیرو کے آس پاس کیا کر رہے تھے : نثار

کورکمانڈر کراچی کی رینجرز ہیڈ کوارٹرز آمد‘ نائن زیرو آپریشن پر شاباش دی‘ قانون کو مطلوب افراد نائن زیرو کے آس پاس کیا کر رہے تھے : نثار

کراچی (آن لائن+ نوائے وقت نیوز+ کامرس رپورٹر) کور کمانڈر کراچی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار نے گزشتہ روز رینجرز ہیڈکوارٹرز کا دورہ کیا اور نائن زیرو پر کامیاب کارروائی پر رینجرز کو شاباش دی۔ انہوں نے کراچی آپریشن کو مزید تیز کرنے کی ہدایت بھی دی۔ اس موقع پر ڈی جی رینجرز نے کراچی میں ٹارگٹڈ آپریشن، نائن زیرو پر ہونے والی کارروائی پر تفصیلی بریفنگ دی اوراس کارروائی میں پکڑے جانے والے اہم ملزمان کے بارے میں بھی بتایا اور پکڑا جانے والا جدید اسلحہ بھی دکھایا گیا۔ کور کمانڈر نوید مختار نے نائن زیرو پر کارروائی میں اہم کامیابی پر رینجرز کی کارکردگی کو سراہا اور شاباش دی اور ہدایت کی کہ کراچی میں جاری ٹارگٹڈ آپریشن میں مزید تیزی لائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی کا امن تباہ کرنے والوں کے خلاف بلاتفریق کارروائی کی جائے۔ بریفنگ میں بتایا گیا کہ نائن زیرو سے 5 جی تھری، 23 ایس ایم جیز، 2 ایل ایم جیز برآمد کی گئی۔ نائن زیرو کا علاقہ نو گو ایریا تھا۔ نائن زیرو پر ٹارگٹ کلرز اور مفرور ملزمان موجود تھے۔ انٹیلی جنس اطلاع پر کارروائی کی گئی۔ دریں اثناءوزیرداخلہ چودھری نثار نے کہا ہے کہ رینجرز نے قانون شکنوں کیخلاف آپریشن کرکے قابل ستائش کام کیا۔ رینجرز کے مطابق نائن زیرو پر رینجرز آپریشن وزیراعلیٰ سندھ کو اعتماد میں لیکر کیا گیا۔ دریں اثناءایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو آنے والے داخلی راستوں سے بیریئرز ہٹا دیئے گئے۔ نجی ٹی وی کے مطابق مکہ چوک اور اللہ والی چورنگی سے بیریئرز ہٹائے گئے ہیں جبکہ نائن زیرو پر تعینات رضاکاروں کو بھی ہٹا دیا گیا۔ رینجرز نے پریس کانفرنس میں بیریئرز کا حوالہ دیا تھا۔ وزیر داخلہ چودھری نثار نے مزید کہا کہ قانون کو مطلوب افراد نائن زیرو کے ارد گرد کیا کر رہے تھے، جو بھی قانون توڑے گا اسے سزا ملے گی۔ ڈی جی رینجرز نے کور کمانڈر کراچی کو بریفنگ میں یہ بھی بتایا کہ اس بات کو بھی یقینی بنایا جائے گا کہ کوئی تفتیش میں اثرانداز ہونے کی جرات نہ کرے۔ ڈی جی رینجرز نے کہا تاجر اور ٹرانسپورٹرز معمول کے مطابق زندگی گزاریں، رینجرز قانون کی عمل داری کو یقینی بنائے گی۔ ڈی جی رینجرز نے تعاون اور آپریشن کامیاب بنانے پر شہریوں کا شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر کور کمانڈر کراچی نے رینجرز کی کارکردگی کو سراہا۔ ان کا کہنا تھا کہ امید کرتا ہوں ٹارگٹیڈ کارروائیوں کو تیزی سے جاری رکھا جائے گا، آخری ٹارگٹ کلر اور دہشت گردی کے خاتمے تک آپریشن جاری رہے گا۔ ڈی جی رینجرز نے کہا کہ سپریم کورٹ کی رولنگ کے مطابق چھاپہ مارا گیا، تحفظ پاکستان آرڈیننس کے تحت رینجرز کو کارروائیوں کا اختیار حاصل ہے۔ دریں اثناءکراچی میں دوسرے دن بھی کاروباری و تجارتی سرگرمیاں جذوی طور پر معطل رہیں۔ شہر کے بیشتر تجارتی مراکز جن میں جوڑیا بازار‘ میرٹ روڈ‘ جونا مارکیٹ‘ بولٹن مارکیٹ‘ نپیئر روڈ‘ سید برہان الدین روڈ ‘ کے بی آئی مراکز اور تھوک مارکیٹوں میں بہت کم دوکانیں اور دفاتر کھل سکے۔ علاوہ ازیں پبلک ٹرانسپورٹ بند ہونے سے کراچی کے تمام صنعتی علاقوں سائیٹ‘ کورنگی‘ لانڈھی‘ فیڈرل بی ایریا‘ نارتھ کراچی‘ سائیٹ سپرہائی وے اور پورٹ محمد بن قاسم کی صنعتوں میں صنعتی کارکنوں اور عملہ کی بہت کم تعداد ڈیوٹیز پر حاضر ہو سکی جبکہ سرکاری‘ نیم سرکاری اور نجی اداروں کے ملازمین کی اکثریت بھی ڈیوٹیز پر نہیں پہنچ سکی۔ شہر میں پٹرول پمپس بند ہونے اور پیٹرول کی عدم دستیابی کی وجہ سے موٹر سائیکل استعمال کرنے والے بھی سارا دن گھروں پہ بیٹھے رہے۔ متحدہ قومی موومنٹ کے کارکن کی تدفین کے موقعہ پر کراچی کے تمام تعلیمی اداروں میں بھی تعطیل رہی اور امتحانات بھی ملتوی کر دیئے گئے۔ دریں اثناءترجمان پاکستان رینجرزسندھ نے کہاکہ صرف جرائم پیشہ افرادکی گرفتاری کیلئے ہی بلاتفریق کارروائی کرتے ہیں، ایک سیاسی تنظیم کی جانب سے متواتر لگائے جانے والے الزامات حقائق کے منافی ہیں، الزامات کا مقصد ملکی سلامتی کیلئے جاری آپریشن کو نقصان پہنچانا ہے۔ انہوں نے کہاکہ جرائم پیشہ افراد کوئی بھی لبادہ اوڑھ لیں، رینجرزکے آپریشن کا ہدف ہیں۔
اسلام آباد (جاوید صدیق) قابل اعتماد ذرائع نے نوائے وقت کو بتایا ہے کہ ڈائریکٹر جنرل رینجرز نے وزارت داخلہ کو کراچی میں ایم کیو ایم کے صدر دفتر نائن زیرو پر چھاپے کے بارے میں جو رپورٹ دی ہے اس کے مطابق اس چھاپے کے دوران 135 غیرملکی ہتھیار پکڑے گئے ہیں جبکہ ان ہتھیاروں کے ساتھ 30 ہزار را¶نڈز بھی قبضہ میں لئے گئے۔ نائن زیرو پر ریڈ میں ایک سو افراد کو گرفتار کیا گیا جس میں 26 ٹارگٹ کلرز ہیں جن کے بارے میں ٹھوس شواہد موجود ہیں۔گرفتار ہونے والوں میں سے 27 کے خلاف ایف آئی آر موجود ہیں۔گرفتار ہونے والوں میں چار افراد علیل ہیں۔ رینجرز کی رپورٹ کے مطابق جو افراد تفتیش کے دوران بیگناہ ثابت ہوں گے انہیں جمعرات کی رات تک رہا کر دیا جائے گا۔ دریں اثناءرینجرز اور دوسرے تحقیقاتی ادارے اس بات کی بھی تحقیقات کر رہے ہیں کہ برآمد ہونے والے ہتھیار کیا نیٹوکے کنٹینروں سے حاصل کئے گئے ہیں یا کہیں سے سمگل کر کے نائن زیرو لائے گئے تھے۔
ڈی جی رینجرز رپورٹ