پنجاب میں سکول ایجوکیشن کیلئے مختص 28 ارب 50 کروڑ روپے استعمال ہی نہ ہو سکے

پنجاب میں سکول ایجوکیشن کیلئے مختص 28 ارب 50 کروڑ روپے استعمال ہی نہ ہو سکے

لاہور (میاں علی افضل سے) پنجاب میں 2014-15ء میں سکول ایجوکیشن کے لئے مختص مجموعی بجٹ میں 28 ارب 50کروڑ استعمال ہی نہیں ہو سکے جو مجموعی بجٹ کا 33.66فیصد بنتا ہے جبکہ ڈویلپمنٹ کیلئے مختص بجٹ کے 19ارب 10کروڑ روپے خرچ نہیں کئے جا سکے اور کرنٹ بجٹ کیلئے مختص 9ارب 40کروڑ روپے استعمال نہیں ہو سکے مختص بجٹ کے استعمال نہ ہونے سے تعلیم کے شعبہ میں کوئی خطر خواہ بہتری نہیں آسکی۔ دانش سکول کیلئے مختص 100فیصد بجٹ استعمال کر لیا گیا پنجاب ایجوکیشن فائونڈیشن نے مختص بجٹ سے تقریبا 2ارب روپے سے زائد کے اخراجات کئے سکولوں کے مختلف منصوبوں کیلئے مختص بجٹ کا صرف 11فیصد ہی استعمال ہو سکا 2014-15بجٹ میں حکومت پنجاب کی جانب سے مجموعی طور پر 84ارب روپے92کروڑ مختص کئے گئے جس میں سے صرف 56ارب 33کروڑروپے استعمال کئے گئے جبکہ 28ارب 50کروڑ روپے پڑے رہے، سکول ایجوکیشن کے 2014-15کے بجٹ میں سکول ایجوکیشن کے ڈویلپمنٹ بجٹ کیلئے 38ارب 20کروڑ رکھے گئے جس میں سے صرف 19ارب 10کروڑ کے اخراجات کئے جا سکے اور 50فیصد بجٹ استعمال ہی نہیں کیا جس سکا جس سے سکولوں کی حالت میں خطر خواہ بہتری نہیں آ سکی 2014-15میں کرنٹ بجٹ کی مد میں 46ارب 71کروڑ 20لاکھ روپے مختص کئے گئے جس میں 37ارب 25کروڑ وپے خرچ کئے جا سکے اور 9ارب 40کروڑ روپے پڑے ہی رہ گئے جو مجموعی کرنٹ بجٹ کا 20فیصد بنتا ہے۔ سکولوں کے مختلف پروجیکٹ کیلئے 18ارب 20کروڑ روپے مختص کئے گئے جس میں سے صرف 1ارب 97کروڑ روپے کے اخراجات کئے گئے دانش سکولوں کیلئے مختص 2ارب روپے خرچ کر لئے گئے پنجاب ایجوکیشن کیلئے 7ارب 50کروڑ روپے فنڈز مختص کیا گیا جبکہ مجموعی طور پر 9ارب 80کروڑ روپے خرچ کئے گئے اور بجٹ کا 31فیصد زائد اخراجات ہوئے۔