’’اسرائیل کو تسلیم کرنے کا بیان‘‘ واجد شمس الحسن کو برطرف کیا جائے: دینی جماعتیں

’’اسرائیل  کو  تسلیم  کرنے  کا  بیان‘‘  واجد  شمس  الحسن  کو  برطرف  کیا  جائے:  دینی  جماعتیں

لاہور (خصوصی رپورٹر) دینی سیاسی جماعتوں نے برطانیہ میں پاکستانی سفیر کی اسرائیل کو تسلیم کرنے کی تجویز کو دینی حمیت کے خلاف قرار دیتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ واجد شمس الحسن کو سفیر کے عہدے سے برطرف کر کے ملک واپس بلایا جائے۔ جماعت اسلامی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر فرید احمد پراچہ نے کہا کہ فلسطینیوں پر قیامت برپا ہے جبکہ حکومتی عہدیداران کی مدد کرنے کی بجائے اسرائیل کو تسلیم کرنے کے بیانات دے کر فلسطینیوں کے زخموں پر نمک پاشی کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے ہماری اہم ذمہ داریوں پر فائز افراد میں سے کوئی امریکہ کا ایجنٹ ہے اور کوئی درپردہ اسرائیل یا بھارت سے تعلق رکھتا ہے۔ مرکزی جمعیت علماء پاکستان کے سربراہ صاحبزادہ فضل کریم نے کہا کہ قبلہ اول پر قبضہ اور فلسطینی بھائیوں کے قتل عام کے باعث اسرائیل ہمارا براہ راست دشمن ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اسرائیل کو تسلیم کرنے کی بات کرنے والے قوم سے معافی مانگیں اور انہیں برطرف کیا جائے۔ جمعیت علماء اسلام (ف) کے سیکرٹری جنرل مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ واجد شمس الحسن کے غیر ذمہ دارانہ بیان کا معاملہ سینٹ میں اٹھائیں گے۔ سیکرٹری اطلاعات مولانا امجد خان نے کہا کہ یہ درفنطنی سفیر نے اپنے طور پر چھوڑی ہے جس کا جے یو آئی سخت نوٹس لے گی۔