اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے قصور واقعے کو پنجاب حکومت کی ناکامی قرار د ے دی

خبریں ماخذ  |  ویب ڈیسک
 اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے قصور واقعے کو پنجاب حکومت کی ناکامی قرار د ے دی

اقومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے قصور واقعے کو پنجاب حکومت کی ناکامی قرار د یتے ہوئے کہا ہے کہ اس مسئلے کو قرارداد، وعدوں اور تقریروں تک محدود نہ کیا جائے۔ صرف سزا کافی نہیں۔ ایسے واقعات روکنے کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے۔ایک ایس پی کو ہٹا دینا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے قصور واقعے پر برہمی کا اظہار کیا اور تمام صوبوں کی کارکردگی سے متعلق اعدادو شمار اسمبلی میں پیش کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا کہ پنجاب میں تحفظ کے اقدامات دکھائے جاتے ہیں وہ کہاں ہیں؟ بتانا چاہیے کہ کس صوبے میں جرائم کی کتنی شرح ہے، جرائم کے اعدادو شمار سے واضح ہوگا کہ کون سی حکومت کتنی ناکام ہے۔اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ یہ واقعہ قصور میں نہیں ہر جگہ ہے۔ یہ واقعہ حکومت کی ناکامی ہے۔ اس مسئلے کو قرارداد، وعدوں اور تقریروں تک محدود نہ کیا جائے، صرف سزا کافی نہیں، ایسے واقعات روکنے کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے۔ ایک ایس پی کو ہٹا دینا کوئی بڑی بات نہیں ہے۔خورشید شاہ نے کہا کہ قصور واقعے نے پورے ملک کو متاثر کیا ہے، جن کی بچیاں ہیں وہ تشویش میں ہیں، ہر ماں اپنی بیٹی کے ساتھ کہاں کہاں جائے گی۔اپوزیشن لیڈر نے مزید کہا کہ یہ پارلیمنٹ نتیجہ مانگے گی، ان ماں باپ کو نتیجہ دیں۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے پانچ سال کے عرصے میں ایسا کوئی کام نہیں کیا جس سے لوگ اپنے آپ کو محفوظ سمجھیں، حکومت بالکل ناکام رہی ہے، اشتہاروں میں دکھائی جانے والی فورس اب کہاں ہے۔واضح رہے کہ قصور میں گزشتہ دنوں اغوا کی جانے والی 7سالہ بچی زینب کو زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا جس کے بعد قصور میں شدید احتجاج کیا گیا اور اس دوران پولیس کی فائرنگ سے دو افراد بھی جاں بحق ہوگئے۔چیف جسٹس پاکستان نے بھی زینب کے قتل کا از خود نوٹس لیا ہے۔