چودھری اسلم کے قتل کا مقدمہ سربراہ طالبان فضل اللہ اور ترجمان شاہد اللہ شاہد کے خلاف درج

چودھری اسلم کے قتل کا مقدمہ سربراہ طالبان فضل اللہ اور ترجمان شاہد اللہ شاہد کے خلاف درج

کراچی (نوائے وقت رپورٹ + ایجنسیاں) ایس پی سی آئی ڈی چودھری اسلم کے قتل کا مقدمہ کالعدم تحریک طالبان کے سربراہ ملا فضل اللہ اور ترجمان شاہد اللہ شاہد کے خلاف تھانہ پی آئی پی میں درج کر لیا گیا۔ کالعدم تحریک طالبان کے سربراہ اور ترجمان کے خلاف پاکستان میں پہلی مرتبہ کوئی مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ مقدمہ سی آئی ڈی انسپکٹر ملک عادل کی مدعیت میں قتل، دہشت گردی ایکٹ سمیت دیگر دفعات کے تحت درج کیا گیا۔ چودھری اسلم کی شہادت سے دو روز قبل ترجمان تحریک طالبان شاہد اللہ شاہد نے انہیں فون پر قتل کی دھمکی دی تھی۔ دوسری جانب چودھری اسلم پر خودکش حملہ کرنے والے ملزم نعیم اللہ کے پورے خاندان کے دہشت گردی کی کارروائیوں اور خودکش حملوں میں ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ خود کش بمبار نعیم اللہ کے بھائی شفیع اللہ نے دوران تفتیش بیان دیتے ہوئے کہا کہ میرے والد رفیع اللہ بنارس قصبہ کالونی میں مدرسہ چلاتے ہیں۔ طالبان کے ساتھ ہمارے خاندانی تعلقات ہیں، میرا ایک بھائی2011ء میں پشاور میں خودکش حملہ کرنے کیلئے جا چکا ہے۔ ایس ایس پی نیاز کھوسو کے مطابق ابتدائی تفتیش کے دوران انکشاف ہوا ہے کہ چودھری اسلم پر خودکش حملہ کرنے والا ملزم نعیم اللہ 7 روز قبل گھر سے غائب ہوا تھا لیکن 3 دن سے اس کا موبائل فون بند جا رہا تھا، اس سے کسی کا رابطہ نہیں تھا۔ پولیس کو خودکش حملہ آور اور پک اپ کے مزید ٹکرے بھی ملے ہیں۔ ایس ایس پی نے کہا کہ عوام کو اگر پک اپ کے ٹکڑے ملیں تو پولیس کے حوالے کردے۔ پولیس دو سے تین کلومیٹر تک سرچ کر رہی ہے۔ آئی جی سندھ پولیس اور دیگر حکام نے ایس پی سی آئی ڈی چودھری اسلم کی جائے شہادت کا دورہ کیا اور عینی شاہدین، واقعاتی شہادتوں، فرانزک چھان بین کی مدد سے ملوث ملزمان کیخلاف انتہائی ٹھوس اور مربوط پولیس اقدامات کے حوالے سے مزید ضروری ہدایات جاری کیں۔ علاوہ ازیں ملزم نعیم اللہ کے والد کا ڈی این اے ٹیسٹ کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق مبینہ حملہ آور کے شناختی کارڈ پر نام نعیم اللہ صدیقی ہے۔ مبینہ خودکش حملہ آور کا اصل پتا ضلع شانگلہ ہے تاریخ پیدائش تین جون 1988 ہے۔ دوسری جانب وفاقی وزیر برائے مذہبی امور و بین المذاہب ہم آہنگی سردار یوسف شہید ایس ایس پی چودھری اسلم کے گھر گئے اور سوگوار خاندان سے تعزیت کی۔