پیپلزپارٹی کو سازش نہیں آتی، سپریم کورٹ کی اپوزیشن جتنی عزت کرتے ہیں: وزیراعظم

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی+اے این این+اے پی اے) وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کا کہنا ہے کارکن وزیراعظم ہونے پر فخر ہے پیپلزپارٹی کو سازش نہیں آتی، ہم مفاہمت کی پالیسی کو آگے لیکر چل رہے ہیں، غیر جانبدار شخصیت کو چیف الیکشن کمشنر بنایا، فخر الدین جی ابراہیم پر کوئی انگلی نہیں اٹھا سکتا، اپوزیشن سمیت تمام جماعتوں سے بات چیت کیلئے تیار ہیں، لوئر مڈل کلاس پاکستان کی ریڑھ کی ہڈی ہے، میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا ہمارے گودام گندم سے بھرے پڑے ہیں کیا یہ کم کارنامہ ہے، پیپلزپارٹی اقتدار میں آئی تو گندم امپورٹ کی جاتی تھی لیکن آج گندم کی پیداوار میں خود کفیل ہی نہیں بلکہ ایکسپورٹ بھی کرتے ہیں، انہوں نے کہا صدر مملکت نے بغیر کہے سارے اختیارات پارلیمنٹ کو منتقل کر دیئے، این ایف سی ایوارڈ سے صوبوں کی معیشت مستحکم کی گئی، بلوچستان کو 40 ارب روپے ملتے تھے لیکن اب 140 ارب روپے ملتے ہیں، ملکی سیاست پیپلزپارٹی اور بھٹو کے ارد گرد گھومتی ہے، ان کا کہنا تھا اتحادیوں کے ساتھ ملکر آگے بڑھیں گے، ڈکٹیٹروں نے پارلیمنٹ، عدلیہ اور میڈیا کے ساتھ ظلم کیا، اپوزیشن ہمارے قریب آئے تو ہماری نیت کا پتہ چلے، ہم بھی سپریم کورٹ کی اپوزیشن جتنی عزت کرتے ہیں۔ مزید براں وزیراعظم نے اے این پی کے رہنما حاجی عدیل کو ٹیلی فون کیا، نجی ٹی وی کے مطابق حاجی عدیل کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے دوہری شہریت بل کے حوالے سے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے، اے این پی کی تجاویز پر بات چیت کیلئے سٹینڈنگ کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا ہے۔ مزید براں وزیراعظم نے متروکہ وقف املاک بورڈ کو ہدایت کی وہ ہندوﺅں کی جائیداد کے دیرینہ مسئلے کو فوری حل کرے۔ یہ ہدایت انہوں نے وزیر مملکت برائے اطلاعات سید صمصام بخاری کی شکایت پر دی جنہوں نے وزیراعظم ہاﺅس میں ان سے ملاقات کی اور ہندوﺅں کے مسائل بارے آگاہ کیا۔ارکان پارلیمنٹ ثریا امیر الدین، نتاشہ دولتانہ سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا ارکان پارلیمنٹ اپنے حلقوں میں ترقیاتی منصوبوں کی مانیٹرنگ کریں۔ وزیراعظم کو فاٹا میں ترقیاتی منصوبوں کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم نے کہا فاٹا کے عوام کو انتہا پسندی اور دہشت گردی کا سب سے زیادہ نشانہ بننا پڑ رہا ہے۔ حکومت فاٹا کی سماجی اور معاشی ترقی کو بہت ترجیح دیتی ہے۔ اے پی پی کے مطابق وزیراعظم نے کہا مزدور اور متوسط طبقہ کو بااختیار بنائے بغیر کوئی ملک ترقی نہیں کرسکتا، ہم عوام سے قوت لیتے ہیں، آزاد میڈیا، آزاد عدلیہ اور منتخب پارلیمنٹ ملک میں جمہوری نظام کے ثمرات ہیں۔ وہ وزیراعظم سیکرٹریٹ میں ”اے پی پی‘ کے 400 سے زائد کنٹریکٹ اور ڈیلی ویجز ملازمین کو مستقبل کئے جانے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا پاکستان پیپلزپارٹی کی زیر قیادت مخلوط حکومت کی عوام میں مضبوط جڑیں ہیں جو لوگوں کی ترقی و خوشحالی کیلئے موثر اقدامات کر رہی ہے۔