رمضان میں لوڈشیڈنگ کے خاتمہ کے لئے اقدامات کئے جائیں‘ 40 سال آگے کا سوچنا ہے ‘ اس لئے متحدہ (ق) لیگ سے اتحاد کیا: صدر

کراچی (سٹاف رپورٹر + نوائے وقت رپورٹ) صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ انہیں ملک چلانا اور 30، 40 سال آگے کا سوچنا ہے اس لئے مسلم لیگ (ق) اور ایم کیو ایم سے اتحاد کیا۔ بلاول ہا¶س کراچی میں ٹھٹھہ کے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا اس وقت ملک کی آبادی 210 ملین ہے اور آئندہ 30 سال کے بعد اس بارے میں سوچنا ہو گا جس کے لئے اقدامات کر رہے ہیں، آئندہ ایک نوکری سے کام نہیں چلے گا گھر چلانے کے لئے مرد، خواتین اور بچوں سب کو کمانا ہو گا۔ صدر نے کہا کہ ذوالفقار آباد کے حوالے سے میڈیا میں مسلسل تنقید کی جا رہی ہے۔ جئے سندھ والے ذوالفقار آباد کی مخالفت کر کے الیکشن مہم چلا رہے ہیں جبکہ پی پی دور کی سوچ رکھتی ہے اسے مینڈیٹ نہیں ملک چاہئے۔ بھٹو نے جب پورٹ قاسم کی تعمیر شروع کی تھی تو جئے سندھ والوں نے اس کی بھی مخالفت کی تھی، ذوالفقار آباد کے لئے جو زمین مقامی افراد سے لی جائے گی اس کی قیمت ادا کی جائے گی، مخالفین کو جواب دینا ہے۔ ٹھٹھہ کی ساحلی پٹی پر مزید دو پورٹس بھی تعمیر کی جائیں گی۔ مزید برآں صدر زرداری نے آج بلاول ہا¶س میں اجلاس طلب کر لیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق اجلاس میں چاروں صوبوں کے گورنرز اور آزاد کشمیر کے صدر شرکت کریں گے۔ قبل ازیں صدر زرداری نے ہدایت کی کراچی میں ہر قیمت پر امن و امان قائم کرنے کے مقاصد کے حصول کے لئے پالیسی ازسرنو مرتب کی جائے اور حساس علاقوں کی نشاندہی کر کے وہاں رینجرز پولیس فرینٹئر کانسٹیبلری کی چوکیاں قائم کی جائیں وہ بلاول ہاﺅس میں امن و امان کے بارے میں اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ جس میں مشیر داخلہ رحمن ملک نے صدر کو کراچی سمیت ملک بھر میں امن و امان کے بارے میں بریفنگ دی صدر نے اس موقع پر کراچی کے تاجروں اور سول سوسائٹی کو بھی اعتماد میں لینے کی ہدایت کی انہوں نے کہا کراچی میں اسلحہ کی ترسیل روکنے کے لئے داخلی راستوں پر ہیوی سکینر لگائے جائیں جو بسوں‘ ٹینکروں اور ٹرالر کو سکین کریں۔ صدر نے رحمن ملک کو ہدایت کی امن و امان کو کنٹرول کرنے کے لئے تمام اداروں کے درمیان رابطے بہتر بنائے جائیں اور رمضان میں مذہبی رواداری بہتر بنانے کے لئے علما کو اعتماد میں لیا جائے۔ رحمن ملک نے صدر کو کراچی گجرات اور کوئٹہ کے واقعات سے آگاہ کیا۔ علاوہ ازیں صدر زرداری نے ملک بھر میں گذشتہ دو برسوں کے مقابلے میں زیادہ بارشوں کی پیش گوئی کے پیش نظر تمام اداروں کو الرٹ کر دیا اور کراچی سمیت تمام اضلاع میں کنٹرول روم قائم کرنے اور تمام اداروں کے درمیان مکمل رابطے کی ہدایت کی ہے وہ بلاول ہاﺅس میں ممکنہ سیلاب سے نمٹنے کی تیاریوں کے بارے میں اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ صدر نے کہا چیف منسٹر ہاﺅس میں مرکزی کنٹرول روم قائم کیا جائے۔ صدر نے کہا کسی خطرہ کے پیش نظر عوام کو پہلے آگاہ کیا جائے۔ صدر زرداری نے بجلی گھروں کو فرنس آئل کی فراہمی کو یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔ صدارتی کیمپ آفس بلاول ہا¶س میں صدر کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں وزیر پانی و بجلی احمد مختار نے بریفنگ دی۔ صدر مملکت نے اس موقع پر ہدایت کی کہ رمضان المبارک میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے مکمل خاتمے کے لئے اقدامات کئے جائیں۔ مزید برآں صدر زرداری نے مشیر داخلہ رحمن ملک کو ہدایت کی ہے کہ گجرات میں آرمی کیمپ پر ہونے والے حملے کی انکوائری کرائیں اور ملزمان کو قانون کے مطابق انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے۔