نظریہ پاکستان ہماری روح ہے‘ آخری دم تک اس کیلئے کام کریں گے : مجید نظامی

لاہور (خبر نگار خصوصی) تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن‘ ممتاز صحافی اور نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے چیئرمین مجید نظامی نے کہا ہے نظریہ پاکستان ہماری روح ہے ۔ ہم آخری دم تک اس کے لئے کام کریں گے۔ہم نے غلام حیدروائیں شہید کے نظریہ پاکستان ٹرسٹ کی شکل میں لگائے ہوئے پودے کو تناوردرخت بنا دیا ہے۔پاکستان کے ایٹمی طاقت بننے پرامریکہ ہمیں کبھی معاف نہیں کرے گا کیونکہ وہ امت مسلمہ کا بہت بڑ ادشمن ہے۔وہ ایوان کارکنان تحریک پاکستان لاہورمیں نظریہ پاکستان ٹرسٹ کے بورڈ آف گورنرز کے چھٹے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے ۔ اجلاس میں کرنل(ر)جمشےد احمد ترےن‘ممتاز مسلم لیگی رہنما سید غوث علی شاہ‘نظریہ پاکستان ٹرسٹ کی سینئر وائس چیئرپرسن بےگم مجےدہ وائےں‘ وائس چےئرمےن پروفےسر ڈاکٹر رفےق احمد‘ ممتاز صحافی اورنظریہ پاکستان فورم بلوچستان کے سرپرست سےد فصےح اقبال‘ٹرسٹ کے مشیر میاں فاروق الطاف‘ ٹرسٹ کے شعبہ خواتین کی کنوینر بےگم مہناز رفےع‘ سےنےٹر نعےم حسےن چٹھہ ‘ٹرسٹ کے سیکرٹری شاہد رشید اورایڈیشنل سیکرٹری رفاقت ریاض نے شرکت کی۔ مجےد نظامی نے کہا ہم نے غلام حےدر وائےں شہےد کے نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی شکل مےں لگائے ہوئے پودے کو تناور درخت بنانے کی بھرپور کوششےں کی ہےں اور الحمدللہ اپنے اس مقصد مےں پوری طرح کامےاب رہے ہےں۔ ےہ ادارہ نظرےہ پاکستان اور دو قومی نظرےئے کا مرکز بن چکا ہے اور اس حوالے سے ےہاں مسلسل سرگرمےاں جاری رہتی ہےں۔ ےہ واحد ادارہ ہے جہاں روزانہ سرگرمےاں وقوع پذےر ہوتی ہےں۔ ہم نئی نسلوں کو ےہ بتاتے ہےں کہ پاکستان کس طرح بنا اور اس کی حفاظت کس طرح کی جاسکتی ہے۔ ملک کے چاروں صوبائی دارالحکومتوں کے علاوہ بڑے شہروں مےں اس کی شاخےں قائم ہوگئی ہےں۔ ےہاں نہاےت منظم طرےقے سے کام ہو رہا ہے جس پر مےں اپنے ساتھےوں کرنل(ر)جمشےد احمد ترےن‘ پروفےسر ڈاکٹر رفےق احمد‘ شاہد رشےد اور رفاقت رےاض کا شکر گزار ہوں۔ مجےد نظامی نے کہا ہم نے بارہ سال نہاےت کامےابی و کامرانی سے گزار دےئے ہےں۔ اللہ کرے اس کے بعد آنے والے لوگ اس ادارے کو بہتر طرےقے سے چلائےں۔ غلام حےدر وائےں شہےد قوم کے لےے جو کچھ کرچکے ہےں اس کا انہےں اللہ پاک اجر عظےم دے۔ مجھ سے بڑھ کر کوئی کمےونسٹ مخالف نہےں لےکن مےں چےن کا بہت بڑا معترف ہوں۔ مےں ماﺅزے تنگ اورچواین لائی کے ہمراہ بےٹھ کر کھانا کھا چکا ہوں۔ چےن کمےونسٹ ےا سوشلسٹ ہونے کے باوجود ہمارا بہترےن دوست ہے۔ امرےکہ ہمےں مسلمان ہونے کے باعث اےٹمی طاقت بننے پر کبھی معاف نہےں کرےگا۔ ہمےں اپنی اس صلاحےت کی حفاظت کرنی چاہئے۔ اےوانِ کارکنانِ تحرےک پاکستان قائداعظمؒ، علامہ محمد اقبالؒ اور مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناحؒ کا گھر ہے۔ ان کی روحےں ےہاں رہتی ہےں۔ ہماری خواتےن کو چاہےے کہ وہ مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناحؒ کو اپنا رول ماڈل بنائےں۔ ہر حکومت نے نظرےہ پاکستان کا قائل نہ ہونے کے باوجود ہم سے تعاون کےا۔ نظرےہ پاکستان ہماری روح ہے۔ ہم آخری دم تک اس کے لےے کام کرےں گے۔ اسی کی بدولت پاکستان زندہ و پائندہ رہے گا۔ اللہ تعالیٰ نظرےہ پاکستان کے مخالف پاکستانی دانشوروں کو اس سے روشناس ہونے کی توفےق بخشے۔ مجےد نظامی نے اےوانِ قائداعظمؒ کے لےے 20کروڑ روپے فراہم کرنے پر وزےراعظم گےلانی اور اےوانِ نظرےہ پاکستان کے لےے اڑھائی کروڑ روپے فراہم کرنے پر وزےراعلیٰ پنجاب مےاں محمد شہباز شرےف کا شکرےہ ادا کےا۔اُنہوں نے کہا اےک اجلاس مےں مَےں نے صدر مشرف سے کہا تھا آپ نے صدر بش نہےں بلکہ کولن پاﺅل کے اےک فون پر سرنڈرکردےا۔ مےری ےہ بات سن کر پروےز مشرف بھڑک اٹھے اور اُنہوں نے اس کے بعد مجھے پےغام بھجواےا آپ آئندہ مےری کسی مےٹنگ مےں شرکت نہےں کرےں گے۔ مےں نے پےغام لانے والے سے کہا خدا کا شکر ہے مجھے آئندہ جنرل صاحب کی شکل دےکھنے کی تکلےف نہےں ہوگی۔ بعدازاں وہ گورنر ہاﺅس لاہور تشرےف لائے تو وہاں سے مجھے فون آےا کہ صدر صاحب تشرےف لائے ہےں آپ مےٹنگ مےں آجائےں۔ فون کرنے والے کے اصرار کے باوجود مےں گورنر ہاﺅس نہےں گےا۔ مجےد نظامی نے کہا اب پروےز مشرف مسلم لےگ بنا کر پاکستان آنا چاہتے ہےں۔ اُنہےں چاہئے وہ مسلم لےگ کو بدنام نہ کرےں بلکہ اس کی بجائے مشرف لےگ بنائےں۔ سےد غوث علی شاہ سندھ اور سےد فصےح اقبال بلوچستان مےں نظرےہ پاکستان فورمز کو مزےد فعال بنائےں۔ کرنل (ر) جمشےد احمد ترےن نے کہا مشرقی پاکستان مےں ہم نے تعلےم کو نظرانداز کےا اور وہاں کے لوگوں کو اہمےت نہےں دی۔ ہم ان کے دوست کی بجائے ان کے حکمران بن کر گئے۔ حکمرانوں نے تعلےم کو اس لےے عام نہےں کےا کہ عام لوگ لکھ پڑھ گئے تو اُنہےں مزارع اور خدمت گار مےسر نہےں آئےں گے۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ ملک مےں واحد ادارہ ہے جو قوم کی نظرےاتی نہج پر تربےت کر رہا ہے اور حکومت پر ےہ دباﺅ ڈال رہا ہے کہ وہ پورے ملک مےں حب الوطنی کے جذبات پےدا کرنے والا ےکساں نصاب تعلےم تشکےل دے۔ ہم نے ہندوﺅں کو اےک ہوّا بناےا ہوا ہے حالانکہ وہ مسلمانوں سے بے حد ڈرتے ہےں۔ خدانخواستہ بھارت نے کبھی پاکستان کےخلاف جنگ کرنے کی کوشش کی تو ہم اُس کا بھر کس نکال دےں گے۔ جب تک کشمےر کا تنازع موجود ہے ہمےں بھارت سے دوستی ےا پےار کی پےنگےں نہےں بڑھانا چاہئےں۔ بھارت نے پاکستانی درےاﺅں پر ڈےم بنا کر پاکستان کو آبی بحران کا شکار کر دےا ہے۔ ہمےں چاہےے بم مار کر ان ڈےموں کو تباہ کر دےں۔ پروفےسر ڈاکٹر رفےق احمد نے نظریہ پاکستان ٹرسٹ کی 16اپریل 2010ءتا9اگست 2010تک کی کارکردگی رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا مجےد نظامی روزانہ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کے دفتر تشرےف لاتے ہےں جس سے ہمارے کام مےں بے حد نکھار پےدا ہوتا ہے۔ ٹرسٹ کے سےکرٹری شاہد رشےد اور اےڈےشنل سےکرٹری رفاقت رےاض ٹرسٹ کی سرگرمےوں کو فروغ دےنے کے لےے شب و روز مصروف جدوجہد ہےں۔ قائداعظمؒ کے الفاظ مےں پاکستان کے قےام کا مقصد مسلمانانِ ہندوستان کو صرف اےک علےحدہ مملکت فراہم کرنا ہی نہےں تھا بلکہ تعلےمی‘ سےاسی‘ سماجی اور مذہبی طور پر انہےں آگے بڑھنے کے تمام تر مواقع فراہم کرنا تھے۔ اُنہوں نے بتاےا حال ہی مےں موسم گرما کی تعطےلات کے دوران پشاور مےں بھی نظرےاتی سمر سکول قائم کےا گےا جس مےں 150طلبہ و طالبات نے داخلہ لےا اور اس کے انتہائی مثبت اثرات مرتب ہوئے۔ ملک بھر مےں نظرےہ پاکستان کی سوچ کونئی نسلوں‘ دانشوروں‘ قلم کاروں‘ محققےن اوردیگر شعبہ ہائے حیات سے تعلق رکھنے والوں میں اجاگر کیا گےا ہے۔ پاکستان کی تعمےر نو کے لےے ”ہماری منزل جدےد اسلامی جمہوری فلاحی مملکت“ کا سلوگن عام کےا ہے۔ تحرےک پاکستان‘ قائداعظمؒ، علامہ اقبالؒ اور مادرِ ملتؒ کی تصاوےر کو گمنامی سے نکال کر عام کےا ہے۔ ان تصاوےر کی پشاور‘ بےن الاقوامی اسلامی ےونےورسٹی اسلام آباد اور پنجاب ےونےورسٹی مےں نمائش منعقد کی گئی ہےں۔ اُنہوں نے بتاےا ٹرسٹ کی بہت سی سرگرمےوں کو طلبا و طالبات کے لےے نہاےت مفےد خےال کرتے ہوئے ہزاروں تعلےمی اداروں نے ازخود اختےار کر لےا ہے۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی تمام تر سرگرمےوں مےں مجےد نظامی کو کلےدی کردار حاصل ہے جو نظرےاتی حدود اربعہ کی دلےرانہ حفاظت اور برملا اشاعت کر رہے ہےں۔ اُنہوں نے نوائے وقت‘ فےملی مےگزےن‘ نےشن‘ ندائے ملت اور پھول کے سےنکڑوں صفحات ٹرسٹ کی سرگرمےوں کے لےے وقف کر دئےے۔ اُنہوں نے بتاےا 16اپرےل 2010ءسے 9اگست 2010تک 74تعلےمی اداروں کے 9250طلبہ و طالبات نے اےوانِ کارکنانِ تحرےک پاکستان لاہور کا مطالعاتی دورہ کےا جبکہ موبائل نظرےاتی تعلےمی ےونٹس کے زےر اہتمام 325تعلےمی اداروں کے 195,000طلبہ و طالبات تک نظرےہ پاکستان کا پےغام پہنچاےا گےا۔ گذشتہ ماہ کے اختتام پر نظرےاتی سمر سکول کے دسوےں سالانہ تعلےمی سےشن کا انعقاد کےا گےا۔ جس مےں مختلف تعلےمی اداروں کے 305طلبہ و طالبات نے داخلہ لےا۔ لاہور کالج برائے خواتےن ےونےورسٹی کی بی اےس آنرز مطالعہ پاکستان کی 12طالبات نے نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کے زےر اہتمام 40روزہ انٹرن شپ پروگرام مےں شرکت کی۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی تمام مطبوعات ٹرسٹ کی وےب سائٹ پر آن لائن کر دی گئی ہےں۔ اےوانِ قائداعظمؒ اور اےوانِ نظرےہ پاکستان کے متعلق ابتدائی مراحل کا کام مکمل ہوچکا ہے اور انشاءاللہ جلد ہی ان کی تعمےر شروع کردی جائے گی۔ سپیرےئر ےونےورسٹی لاہور کے بی کام اور اےم کام کے 400طلبہ و طالبات نے پاکستان آگہی پروگرام کے سلسلے مےں اےوانِ کارکنانِ تحرےک پاکستان کا پانچ دنوں کے لےے مطالعاتی دورہ کےا۔ مزےد اعلیٰ تعلےمی اداروں نے بھی اپنے طلبہ کو ےہاں بھےجنے کی اپنی خواہش کا اظہار کےا ہے۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کے تمام وابستگان اپنی اےک دن کی تنخواہ سےلاب زدگان کی مدد کے لےے دےں گے تاکہ مصےبت و مشکل کی اس گھڑی مےں اپنے بھائےوں کی مدد کر سکےں۔ سےد غوث علی شاہ نے کہا کہ مجےد نظامی پاکستان کی بقا کا کام کر رہے ہےں جس کا اکثر لوگوں کو صحےح ادراک نہےں۔ مشرقی پاکستان کی علےحدگی کا اےک سبب وہاں کے تعلےمی اداروں مےں ہندو اساتذہ کی سرگرمےاں تھےں جنہوں نے مسلمان طلبہ کی برےن واشنگ کر کے انہےں پاکستان کے مخالف کر دےا۔ نصاب تعلےم قومی امنگوں کے مطابق ہونا چاہےے لےکن بدقسمتی سے اےسا نہےں۔ اُنہوں نے تجوےز دی نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کے پلےٹ فارم سے حکومت پر دباﺅ ڈالا جائے کہ وہ پورے ملک مےں دسوےں جماعت تک ےکساں نصاب تعلےم رائج کرے۔ اُنہوں نے کہا مےں نے سندھ کے وزےرتعلےم کی حےثےت سے نصاب مےں سے اےسا مواد نکال دےا تھا جس سے صوبائی تعصب کے جذبات کو ہوا ملتی تھی۔ مےرے آئےڈےل قائداعظمؒ ہےں‘ پاکستان کا مستقبل مسلم لےگ سے وابستہ ہے۔ بہت عرصہ قبل مجھے پےپلز پارٹی مےں شامل ہونے کی بھرپور دعوت دی گئی لےکن مےں نے انکار کر دیا کہ مےں قائداعظمؒ کے علاوہ کسی اور کو اپنا آئےڈےل نہےں بناﺅں گا۔ قےامِ پاکستان کے فوراً بعد ہی دشمن کی اےماءپر چند لوگوں نے پختونستان‘ سندھودیش اور آزاد بلوچستان کا نعرہ لگاےا تاکہ پاکستان کونقصان پہنچے ۔تب یہ نعرہ ناکام ہوگیا تھا لیکن آج اسے کامیابی سے ہم کنارکرنے کے لئے کوششیں کی جا رہی ہیں۔ ہم مسلم لےگ کے اتحاد کے لےے مجےد نظامی کی کاوشوں کو قدر کی نگاہ سے دےکھتے ہےں کیونکہ مسلم لےگ کے اتحاد سے ہی پاکستان ترقی کرے گا۔ غلام حےدر وائےں شہےد نہاےت مخلص اور اےماندار سےاستدان تھے۔ اُنہوں نے نظرےہ پاکستان ٹرسٹ قائم کرنے کے لےے مسلم لےگ کے فنڈ سے 2کروڑ روپے قرض لےے۔ بعدازاں ےہ تمام رقم واپس کر دی۔ ےہ اےمانداری کی اےک روشن مثال ہے۔ ےہ مےرے لےے بڑے اعزاز کی بات ہے کہ مےں نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی امدادی تنظےم کو سندھ مےں خوش آمدےد کہوں۔ موجودہ حالات مےں نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی ذمے دارےاں بہت زےادہ بڑھ گئی ہےں۔ نظرےہ پاکستان کے لٹرےچر کو چاروں صوبوں کی مقامی زبانوں مےں بھی شائع کےا جائے تاکہ عام لوگ اس کا بخوبی مطالعہ کر سکےں۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کے ذمے داران مجےد نظامی کی سرپرستی مےں جس خلوص سے کام کر رہے ہےں اس سے ہمارا اےمان پختہ ہوگےا ہے کہ پاکستان کو کبھی کچھ نہےں ہوگا۔ بےگم مجےدہ وائےں نے کہا غلام حےدر وائےں شہےد نہاےت محب وطن پاکستانی تھے۔ وہ زندہ ہوتے تو آج پاکستان کے ےہ حالات نہ ہوتے۔ تمام تر برے حالات کے باوجود پاکستان کو نقصان نہےں پہنچے گا بلکہ ےہ انشاءاللہ ہمےشہ ترقی کرے گا۔ بحےثےت قوم ہمارے اعمال درست نہےں جس کے باعث ہم پر سےلاب خدا کا عذاب بن کر نازل ہوا ہے۔ ہمےں اللہ سے توبہ کرنی چاہےے۔ سےد فصےح اقبال نے کہا نظرےہ پاکستان ٹرسٹ نے نہایت قلےل عرصے مےں بہت زےادہ کام کےا ہے ۔ ےہ قومی ادارے کا کردار ادا کررہا ہے۔ نظرےاتی سرحدوںکی حفاظت کے لےے مجےد نظامی ہمےشہ اہم کردار ادا کرتے رہے ہےں۔ مجےد نظامی ڈکٹےٹروں کے منہ پر بھی ہمےشہ حق بات کہتے رہے۔ مجےد نظامی نے ملک بھر کے مختلف حصوں سے لوگوں کو اےک جگہ پر اکٹھا کرکے اےک گلدستہ بنا دےا ہے۔ جو کام بھارت مےں حکومت کررہی ہے وہ کام نظرےہ پاکستان ٹرسٹ تن تنہا کررہا ہے۔ افسوس ہماری حکومت کو اس کی توفےق نہ ہو سکی۔ قوم کا ہر فرد مجےد نظامی کی عزت کرتا ہے۔ مجید نظامی کو چاہےے کہ وہ خےبر پی کے‘ سندھ اور بلوچستان کا دورہ کرےں تاکہ وہاں پائے جانے والے تعصب کا خاتمہ ہوسکے۔ ہر سال صوبائی دارالحکومتوں مےں نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی تقرےبات منعقد کی جائےں۔ مجید نظامی کے دورے سے مختلف علاقوں مےں نظرےہ پاکستان کی تروےج و اشاعت کے لےے کام کرنے والوں کی بے حد حوصلہ افزائی ہو گی۔ بلوچستان کے لوگ پاکستان کے نہےں بلکہ حکومت کےخلاف ہےں۔ ملک بھرمیں نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی کاوشوں کے اثرات نمودار ہونے شروع ہو گئے ہےں۔ کوئٹہ مےں مےں نے قومیت پرستوں کو اپنے گھر بلا کر انہےں بتاےا قائداعظمؒ کس قسم کا پاکستان چاہتے تھے۔ بلوچستان مےں گزشتہ برس آنے والے زلزلے مےں مجےد نظامی کی سرپرستی مےں نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی امداد سے بلوچ عوام پر خوشگوار اثرات مرتب ہوئے۔ اُنہوں نے بتاےا اسلام آباد مےں نظرےہ پاکستان کونسل کی ایک جعلی تنظےم بنائی گئی تھی جس نے حکومت سے زمین بھی حاصل کرلی تھی لیکن ان کی جعل سازی ثابت ہونے پر زمےن واپس لے لی گئی۔ اس سے آئندہ کسی کو ےہ جرات نہےں ہوگی کہ وہ قائداعظمؒ ےا نظرےہ پاکستان کا نام لے کر جعل سازی کر سکے۔ اُنہوں نے بتاےا مجھے حال ہی مےں چےن جانے کا اتفاق ہوا وہاں مےں نے کمےونسٹ پارٹی کے ذمے داران کو نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کا لٹرےچر دےا جس پر وہ بےحد خوش ہوئے اور مزےد لٹرےچر کی فراہمی کی خواہش کا اظہار کےا۔ مےاں فاروق الطاف نے کہا ہمےں ملک مےں خونیں انقلاب کی بجائے معاشی ےا جمہوری انقلاب کی باتےں کرنا چاہئےں۔ خونیں انقلاب کی باتیں عوام کے ذہنوں پر منفی اثرات مرتب کرتی ہیں۔ تبدےلی کے لےے جمہوری انقلاب ضروری ہے۔ مجےد نظامی ہمےشہ ےہی کہتے ہےں کہ ہم ہندوﺅں کے ساتھ لڑکر مرےں گے نہےں بلکہ ان سے لڑ کر کشمےر لےں گے۔ رضا کارانہ طور پر اےوانِ کارکنانِ تحرےک پاکستان مےں پشتو‘ سندھی اور بلوچی زبانوں کی تعلےم دےنے والے اساتذہ کرام کے لےے اخبارات مےں اشتہار دےا جائے۔ سےلاب متاثرےن کی مدد کے لےے زےادہ سے زےادہ فنڈ دےا جائے۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی ٹےم امدادی سامان لے کر از خود سندھ اور بلوچستان کے متاثرہ علاقوں مےں جائے۔ بےگم مہناز رفےع نے کہا مجھے اےک ماہ کے لےے دبئی جانے کا اتفاق ہوا۔ وہاں اےک پاکستانی مےاں منےر نے نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کی سرگرمےوں سے متاثر ہوکر متحدہ عرب امارات کے پاکستانی تعلےمی اداروں کے اساتذہ کرام کا اےک اجلاس منعقد کرکے انہےں ٹرسٹ کی سرگرمےوں سے تفصےلی آگاہ کےا۔ ان اساتذہ کرام کا کہنا تھا کہ وہ اپنے تعلےمی اداروں مےں طلبہ و طالبات کو نظرےہ پاکستان کا پےغام پہنچانے کے لےے باقاعدہ سوسائٹےز قائم کرےنگے۔ ےو اے ای مےں مقےم پاکستانےوں مےں نظرےہ پاکستان کے لےے کام کرنے کا بہت زےادہ جوش و جذبہ پاےا جاتا ہے۔ مےں نے وزےراعظم کی مشیر شہنازعلی کو تجوےز دی ہے کہ ہر صوبے مےں مادرِ ملتؒ کے حوالے سے اےک سےنٹر قائم کےا جائے جہاں ہنر مند خواتےن کی تےار کردہ مصنوعات کی نمائش کی جاسکے۔ جسے بعدازاں ضلعی سطح پر قائم کےا جائے گا۔ سےنےٹر نعےم حسےن چٹھہ نے کہا اس وقت پورا ملک سےلاب کی تباہ کارےوں کا شکار ہے۔ ہمےں اللہ تعالیٰ سے اپنے گناہوں کی معافی مانگنا چاہئے۔ حکمرانوں کی کوتاہےوں اور غلطےوں کی سزا عوام کو بھگتنا پڑتی ہے۔ موجودہ بدتر حالات کے باوجود ہم ماےوس نہےں۔ قائداعظمؒ نے ےہی فرماےا تھا پاکستان تا قےامت قائم رہے گا۔ نظریہ پاکستان ٹرسٹ نے گزشتہ برسوں کے دوران جو کامےابےاں حاصل کی ہیں‘ وہ اس کے کام سے بخوبی عےاں ہےں۔اُنہوں نے تجوےز دی اےوانِ قائداعظمؒ اور اےوانِ نظرےہ پاکستان کے ساتھ رہائشی عمارت بھی تعمےر کی جائے تاکہ دور دراز علاقوں سے آنے والے مہمان وہاں رہائش اختےار کر سکےں۔ اُنہوں نے بتاےا سینٹ کے ممبران نے اےک ماہ کی تنخواہ بلوچستان کے متاثرےن ِ سیلاب اور اےک ماہ کی تنخواہ دےگر صوبوں کے متاثرین سےلاب کے لےے عطےہ کردی ہے۔ اُنہوں نے کہا بلوچستان ہمارا بھائی اور پاکستان کا مستقبل ہے۔ قبل ازیں شاہد رشید نے شرکائے اجلاس کی آمد پر ان کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا بورڈ آف گورنرز کا اجلاس قواعد و ضوابط کے مطابق طے شدہ عرصے کے دوران باقاعدگی کے ساتھ منعقد ہوتا ہے۔ مجید نظامی کی ذاتی دلچسپی کے باعث غلام حیدر وائیں شہید کا لگایا ہوا پودا ایک تناور درخت بن چکا ہے۔ مجید نظامی سلطان ٹیپوؒ والی لڑائی لڑ رہے ہیں۔ پوری قوم ان کی طرف دیکھتی اور ان سے رہنمائی حاصل کرتی ہے۔ پہلے لوگ نظریہ پاکستان کا نام لینے سے گھبراتے تھے لیکن مجید نظامی نے ان کی جھجک ختم کردی ہے اور اب وہ اس کے لئے کام کرنے پر فخر محسوس کرتے ہیں۔ اجلاس کے آغاز میں مشاہیر تحریک آزادی‘ شہدائے تحریک پاکستان‘ غلام حیدر وائیں شہید‘ بورڈ آف گورنرز کے وفات پانے والے ارکان اور حالیہ سیلاب میں جاںبحق ہونے والوں کی بلندی درجات کے لئے دعا کرائی گئی۔