کراچی میں نئی حلقہ بندیوں پر ایم کیو ایم کی نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں سماعت کیلئے منظور کرلی گئی۔

کراچی میں نئی حلقہ بندیوں پر ایم کیو ایم کی نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں سماعت کیلئے منظور کرلی گئی۔

سپریم کورٹ میں کراچی میں نئی حلقہ بندی سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں پانچ رکنی بینچ نے کی، جس میں ایم کیو ایم کی نظر ثانی کی درخواست دفتراعتراضات دور کئے جانے کے بعد سماعت کیلئے منظورکرلی گئی۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس نے متحدہ کے وکیل بیرسٹر فروغ نسیم سے استفسار کیا کہ انہوں نے چھ اکتوبر کا حکم نامہ تو چیلنج کیا ہی نہیں۔ اس پر ایم کیو ایم کے وکیل نے کہا کہ متحدہ کو چھ اکتوبر دوہزار گیارہ کے عدالتی فیصلے پر اعترض نہیں، چھبیس اوراٹھائیس نومبر دوہزار بارہ کے عمدرآمد بینچ کے فیصلوں کو چیلنج کیا ہے۔ اس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ یہ احکامات مرکزی حکم نامے کی روشنی میں جاری ہوئے۔ سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے بیرسٹر فروغ نسیم نے کہا کہ ایم کیو ایم کراچی کو بد امنی سے پاک رکھناچاہتی ہے، قانون کے مطابق نئی حلقہ بندیاں مردم شماری کے بغیر نہیں ہوسکتیں۔