بجلی‘ گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ‘ آٹا نایاب‘ لاہور میں خواتین کا احتجاج‘ کئی شہروں میں مظاہرے

بجلی‘ گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ‘ آٹا نایاب‘ لاہور میں خواتین کا احتجاج‘ کئی شہروں میں مظاہرے

لاہور+ گوجرانوالہ (نیوز رپورٹر+ نامہ نگاران) بجلی اور گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ سے پانی کے بعد آٹا بھی نایاب ہو گیا، کوئلہ اور ایل پی جی غریب کی پہنچ سے باہر ہو گئے۔ لاہور میں گیس کی لوڈشیڈنگ خواتین کا شدید احتجاج، مختلف شہروں میں مظاہرے کئے گئے، گندم کے نرخوں میں اضافے کے بعد ملک بھر آٹا کی شدید قلت ہو گئی۔ تفصیلات کے مطابق لاہور کے شہری مشیر گیس کی قلت پر سوئی ناردرن کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے ہیں۔ گزشتہ روز گیس کمپنی لاہور ریجن کے دفتر گورو مانگٹ روڈ ، سوئی ناردرن ہیڈ آفس کشمیر روڈ اور پریس کلب کے باہر سینکڑوں افراد جن میں مردوں کے علاوہ خواتین و بچوں کی بھی بڑی تعداد تھی نے شدید احتجاج کیا۔ گورومانگٹ روڈ پر ماڈل کالونی والٹن ، سمن آباد، ٹاﺅن شپ، فیصل ٹاﺅن ، چونگی امر سدھو سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد جن میں خواتین اور بچے بھی شامل نے سڑک کو منگل کی صبح بلاک کر دیا۔ جس سے ٹریفک جام ہوگئی۔ مظاہرین نے کہا مشیر پٹرولیم کی ہدایت پر سوئی ناردرن ملی بھگت سے انڈسٹری کو چوری چھپے گیس فراہم کر رہی ہے اور ہم پر یہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ گیس کا بدترین بحران ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم گیس کے بل ہرگز جمع نہیں کرائیں گے۔ پولیس کی بھاری نفری نے مظاہرین کو منتشر کیا۔ دریں اثنا سوئی ناردرن ہیڈ آفس کشمیر روڈ اور پریس کلب کے باہر قلعہ گجر سنگھ اور اس کے گردونواح کے شہریوں نے شدید مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے پہلے کشمیر روڈ پر مظاہرہ کیا جس کے بعد مظاہرین نے پریس کلب کے باہر روڈ بلاک کرکے گیس کی بندش کے خلاف احتجاج کیا۔ سکھیکی میں گیس پریشر نہ ہونے کی وجہ سے خواتین کو کھانا پکانے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ گھریلو صارفین نے وفاقی حکومت سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ ملز اور سی این جی سٹیشنوں کو سوئی گیس فراہم کرنے کے لئے گھریلو کوٹہ کے پریشر کو کم نہ کیا جائے۔ حافظ آباد سے بیورو رپورٹ کے مطابق حافظ آباد میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 20گھنٹے سے تجاوز کر گیا۔ ننکانہ صاحب میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 16جبکہ گیس کی لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 20گھنٹے سے بھی تجاوز کر گیا۔ صفدر آباد میں مرکزی انجمن تاجران کے زیراہتمام شہریوں نے بجلی و گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ کے خلاف زبردست احتجاج کیا۔ شہریوں نے حکمرانوں کو بددعائیں دیتے ہوئے بجلی و گیس کے بلوں کی ادائیگی نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ایمن آباد میں دسویں روز بھی گیس کی سپلائی بند، لوگوں کو جلانے کے لئے لکڑی، اپلے تک دستیاب نہیں، سلنڈر گیس 200روپے کلو بمشکل دستیاب ہے، لوگ کھانا پکانے سے بھی محروم ہیں۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ اگر انہیں فی الفور گیس بحال نہ کی گئی تو وہ سڑکوں ، گلیوں اور بازاروں میں حکمرانوں اور سوئی گیس حکام کے پتلے جلاکر شدید احتجاج کریں گے۔ گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابقگوجرانوالہ میں ایل پی جی کی مہنگے داموں فروخت کیخلاف رکشہ ڈرائیور سراپا احتجاج بن گئے، ڈی سی او آفس کے باہر رکشے کھڑے کر کے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے سینہ کوبی کی اور ایل پی جی مقررہ نرخوں سے زائد قیمتوں پر فروخت کرنیوالے دکانداروں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کیا تاہم پولیس کی بھاری نفری بھی موقع پر پہنچ گئی اور مظاہرین کو ایل پی جی کی مقررہ نرخوں پر دستیابی کی یقین دہانی کروائی جس پر مظاہرین منتشر ہو گئے۔