زرداری کی افغان صدر اور چیف ایگزیکٹو سے ملاقاتیں‘ دہشت گردی کیخلاف تعاون پر تبادلہ خیال

زرداری کی افغان صدر اور چیف ایگزیکٹو سے ملاقاتیں‘ دہشت گردی کیخلاف تعاون پر تبادلہ خیال

کابل+ کراچی (نوائے وقت رپورٹ) پیپلز پارٹی کے وفد نے افغانستان کا دورہ کیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق پی پی کے وفد میں آصف زرداری، یوسف رضا گیلانی، شیری رحمان، فیصل کریم کنڈی شامل تھے۔آصف علی زرداری نے افغان چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ سے کابل میں ملاقات کی۔ پی پی کے وفد نے ان کے ہمراہ دوپہر کا کھانا کھایا۔ آصف زرداری نے رات کے کھانے پر افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی جس میں افغان قیادت سے انسداد دہشت گردی سے متعلق تعاون پر بات چیت کی گئی۔ دو روزہ دورے کے دوران وفد سابق وزیراعظم کے مغوی بیٹے کے حوالے سے بھی افغان حکام سے بات کریں گے۔ قبل ازیں پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین سابق صدر آصف زرداری نے حکومت کی جانب سے کاشتکاروں کو مستقل نظرانداز کرنے پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زراعت ملک کی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اور ملک کے کاشتکاروں میں بڑھتی ہوئی مایوسی ملک کی معیشت کے لئے برا شگون ہے۔ ملاقات میں کاشتکاروں کو درپیش مشکلات اور بلدیاتی انتخابات بھی زیر بحث آئے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے ترجمان سنیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ سابق صدر نے پارٹی رہنماﺅں کو ہدایت کی کہ وہ کاشتکاروں سے مل کر ان کے مسائل کو تمام فورم بشمول پارلیمنٹ میں اٹھائیں۔ آصف زرداری اور افغان صدر کی ملاقات میں پاک افغان صدر کی ملاقات میں پاک افغان تعلقات اور خطے کی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ زرداری نے افغانستان میں اتحادی حکومت کے قیام کو سراہا۔ پی پی کے وفد نے پاکستان سفارتخانے کا بھی دورہ کیا اور سفارتخانے کے لان میں پودا لگایا۔ وفد نے دونوں ممالک کے درمیان عوام کے رابطے، معیشت، تجارت کو بہتر بنانے پر زور دیا۔ آج ناشتے پر افغانستان کی سول سوسائٹی سے ملاقات کے بعد وفد کابل سے واپس اسلام آباد کے لئے روانہ ہو گا۔
پی پی وفد/کابل ملاقاتیں