دہشت گردی میں ”را“ کے ملوث ہونے کا معاملہ ہر سطح پر اٹھایا‘ بھارت ہمارے داخلی معاملات میں مداخلت سے گریز کرے : پاکستان

دہشت گردی میں ”را“ کے ملوث ہونے کا معاملہ ہر سطح پر اٹھایا‘ بھارت ہمارے داخلی معاملات میں مداخلت سے گریز کرے : پاکستان

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) دفتر خارجہ نے انکشاف کیا ہے کہ ملک کے اندر ہونے والی دہشت گردی میں بھارتی انٹیلی جنس ایجنسی را کے ملوث ہونے کا معاملہ ہر سطح پر بھارت کے ساتھ اٹھایا گیا ہے۔ ذاتی حیثیت میں کوئی شخص لڑنے کیلئے یمن سمیت بیرون ملک نہیں جا سکتا، سکیورٹی ادارے ایسے افراد کو روکنے کے پابند ہیں۔ دفتر خارجہ کے نئے ترجمان قاضی خلیل اللہ نے گذشتہ روز اپنی پہلی پریس بریفنگ میں سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ فاٹا اور بلوچستان سمیت ملک میں را کے ملوث ہونے کا معاملہ مارچ میں دونوں ملکوں کے درمیان خارجہ سیکرٹریوں کی سطح پر ہونے والے مذاکرات کے دوران بھی اٹھایا گیا تھا۔ واضح رہے کہ حالیہ کور کمانڈرز کانفرنس کے بعد فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کی طرف سے جاری کردہ پریس بیان میں را پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ وہ پاکستان میں دہشت گردی کو ہوا دے رہی ہے۔ بھارت کی طرف سے ذکی الرحمٰن لکھوی کی رہائی کے معاملہ پر اقوام متحدہ سے رجوع کرنے کے سوال پر ترجمان نے کہا کہ پاکستان، لکھوی پر اقوام متحدہ کی طرف سے سفری پابندیاں عائد کرنے، ہتھیاروں پر پابندی اور اثاثہ جات منجمند کرنے کے ضمن میں اقدامات کر چکا ہے۔ پاکستان بارہا کہہ چکا ہے کہ اسے داﺅد ابراہیم کی موجودگی کا علم نہیں اب بھارتی حکومت نے لوک سبھا میں لاعلمی کا اظہار کر دیا ہے۔ انہوں نے واہگہ اٹاری بارڈر پر بھارت جانے والے پاکستانی مسافروں کو پولیو ویکسینیشن سرٹیفیکیٹ ہونے کے باوجود دوبارہ قطرے پلائے جانے اور سعودی سفارتخانے میں قبائلی عمائدین کی طرف سے پچاس ہزار قبائلی بھجوانے کی پیشکش جیسے امور کے بارے میں اپنی لاعلمی کا اظہار کیا۔ ترجمان نے کہا کہ یمن کے حوالے سے حکومت پاکستان کا موقف واضح ہے کہ کسی بھی شخص کو آزاد حیثیت میں کسی دوسرے ملک میں جا کر لڑنے کی اجازت نہیں۔ سعودی عرب کے ساتھ مسلسل رابطے موجود ہیں۔ طالبان اور افغان حکومت کے درمیان دوہا مذاکرات کے لئے پاکستان کے کردار کے حوالے سے سوال پر ترجمان نے کہا کہ افغانستان میں قیام امن کو پاکستان بہت اہمیت دیتا ہے۔ سابق صدر آصف علی زرداری اور سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے مجوزہ دورہ کابل کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں ترجمان نے کہا کہ پاکستان ایسے رابطوں کا حامی ہے۔ وزیراعظم نواز شریف کے دورہ کابل کے حوالے سے ترجمان کا کہنا تھا کہ دورے سے ایک یا دو روز قبل اس کی تاریخ اور تفصیلات کا اعلان کردیا جائے گا۔ اس سوال پر کہ افغانستان کی طرف سے دھمکی دی گئی ہے کہ اگر اس کے ٹرکوں کو بھارت جانے کی اجازت نہ دی گئی تو وہ پاکستان کے وسطی ایشیائی ریاستوں سے تجارت کے راستے بند کردے گا۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان ٹرانزٹ ٹریڈ کا واضح معاہدہ موجود ہے جس پر ہم عملدرآمد کر رہے ہیں۔ اٹلی میں جن پاکستانیوں کو حراست میں لیا گیا ہے اس بارے میں پاکستان نے تفصیلات طلب کی ہیں، ترجمان نے کہا کہ پاکستان اور برطانیہ کے قریبی تعلقات ہیں، برطانیہ میں کسی بھی جماعت کی حکومت ہو، دونوں ممالک کے تعلقات پر اثر نہیں پڑتا۔ بریفنگ سے پہلے سابق ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نے نئے ترجمان قاضی خلیل اللہ کا ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے تعارف کروایا۔ بی بی سی کے مطابق دفتر خارجہ کے مطابق بھارت سے سیکرٹری خارجہ سطح کی حالیہ بات چیت سمیت بہت سے موقعوں پر پاکستان نے اپنے داخلی معاملات میں بھارتی مداخلت کے ثبوت فراہم کیے ہیں۔ خلیل اللہ قاضی نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران کہا کہ پاکستان نے بارہا یہ باور کرایا ہے کہ وہ اس کے داخلی معاملات میں مداخلت سے گریز کرے۔ سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق ترجمان نے کہا ’پاکستان نے سیکرٹری خارجہ سطح کی حالیہ بات چیت سمیت بہت سے موقعوں پر اپنے داخلی معاملات میں بھارت کی مداخلت کے ثبوت فراہم کیے ہیں۔‘

پاکستان