کشمیر اور گلگت کے فیصلے اسلام آباد میں ہوتے ہیں‘ جیت کر نیا نظام لائیں گے : عمران خان

کشمیر اور گلگت کے فیصلے اسلام آباد میں ہوتے ہیں‘ جیت کر نیا نظام لائیں گے : عمران خان

اسلام آباد (آئی این پی) عمران خان نے کہا ہے کہ تحریک انصاف نے سینٹ کے انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کو بے نقاب کیا‘ ہمارے صوبائی ارکان اسمبلی نے کروڑوں کی آفرز ٹھکرا کر اپنے پارٹی امیدواروں کو ووٹ دیا‘ ہمارے 80 فیصد ایم پی ایز نے زندگی میں ایک کروڑ نہیں دیکھا تھا لیکن انہوں نے 4، 4 کروڑ کی آفرز ٹھکرائیں۔ آزاد عدلیہ کے بعد اب آزاد اور خودمختار الیکشن کمشن کیلئے جنگ لڑیں گے‘ آزاد کشمیر اور جی بی کے فیصلے اسلام آباد میں ہوتے ہیں‘ ان خطوں میں الیکشن جیت کر نیا نظام لائیں گے‘ دونوں خطوں کے عوام اور حکومتوں کو بااختیار بنائیں گے‘ کشمیر اور جی بی کے فیصلے گلگت اور مظفرآباد میں ہوں گے، کسی کو دھاندلی نہیں کرنے دینگے ۔ تحریک انصاف گلگت بلتستان کے کنونشن سے خطاب میں انہوں نے کہاکہ کے پی کے میں بلدیاتی انتخابات کیلئے جون کی تاریخ دی ہے۔ بلدیاتی نظام کے ذریعے اختیارات نچلی سطح پر منتقل کر دیں گے۔ برسراقتدار آکر پتہ چلا کہ وفاق کس طرح صوبوں کے حقوق غصب کرتا ہے۔ کے پی کے کو گیس اور پانی کے وسائل میں اس کا حصہ فراہم نہیں کیا جا رہا۔ وزیراعلی شریف آدمی ہیں اگر میں خود وزیراعلی ہوتا تو وفاق کو مشکل میں ڈال دیتا۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر برائے امور کشمیر برجیس طاہر کو دھاندلی کرانے کیلئے جی بی کا گورنر بنایا گیا ہے۔ نگران حکومت بھی غیر جانبدار نہیں ہے۔ جی بی کی نگران حکومت کیخلاف عوام کو اٹھ کھڑا ہونا ہوگا۔ نواز شریف نے زندگی میں کبھی کوئی میچ نیوٹرل امپائر کھڑے کرکے نہیں کھیلا جبکہ میں نے کرکٹ میں نیوٹرل امپائر متعارف کروائے۔ آزاد و خودمختار الیکشن کمشن کے بغیر حقیقی جمہوریت کا قیام مشکل ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ تحریک انصاف کے امیدواروں کی انتخابی مہم چلانے کیلئے جلد گلگت بلتستان کا دورہ کریں گے۔