صدارتی آرڈیننس کی موجودگی میں فاٹا کے سینٹ انتخابات نہیں کرائے جا سکتے: الیکشن کمیشن

صدارتی آرڈیننس کی موجودگی میں فاٹا کے سینٹ انتخابات نہیں کرائے جا سکتے: الیکشن کمیشن

ذرائع الیکشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق فاٹا میں سینٹ کے الیکشن موجودہ صدارتی آرڈیننس کی موجودگی میں نہیں کرائے جا سکتے، اس آرڈیننس میں  فاٹا کو ایک حلقہ قرار دیا گیا ہے،حلقے کا انتخاب پارلیمنٹ میں نہیں کرایا جا سکتا۔ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن نے دیگر متنازعہ نکات سے بھی حکومت کو آگاہ کر دیا ہے۔ الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ جب تک موجودہ آرڈیننس میں خامیاں دور نہیں کی جاتیں یا اسے واپس نہیں لیا جاتا ، اس وقت تک فاٹا کا سینٹ الیکشن کرانا ناممکن ہے۔ دوسری جانب حکومت کی طرف سے آرڈیننس میں موجود خامیوں کے حوالے سے مشاورت شروع کر دی ہے جبکہ فاٹا اراکین کو منانے کے لیے بھی حکومت  نے کوششیں شروع کر دی ہیں۔