سٹین کی پہلی گیند سے اندازہ لگالیا تھا کہ کریز پر کھڑے ہوکر کھیلنا مشکل ہوگا : سرفراز احمد

سٹین کی پہلی  گیند سے  اندازہ لگالیا تھا کہ کریز پر کھڑے ہوکر کھیلنا مشکل ہوگا : سرفراز احمد

ورلڈ کپ کے پہلے چار میچوں میں سرفراز احمد کو کھیلنے کا موقع نہ مل سکا  لیکن جب جنوبی افریقہ کیخلاف موقع ملا تو انہوں نے اس سے بھرپور فائدہ اٹھایا، اپنی واپسی پر غیر ملکی نشریاتی ادارے کو انٹرویومیں سرفراز کا کہنا تھا کہ ورلڈ کپ کا یہ بہت بڑا میچ تھا اور میرا یہ عالمی کپ کا پہلا میچ تھا لہذا میں خاصا دباؤ محسوس کررہا تھا
’میں نے سٹین کی پہلی ہی گیند سے یہ اندازہ لگالیا تھا کہ کریز پر کھڑے ہوکر کھیلنا مشکل ہوگا میں نے کوشش کی  بولرنہ دیکھو ؟ ان کی گیندوں کو دیکھوں
 ورلڈ ریکارڈ بنانے پر ان کا کہنا تھا مجھے یہ تو معلوم تھا کہ پاکستانی وکٹ کیپرز نے ایک میچ میں پانچ کیچز لیے ہیں لیکن میچ کے بعد یہ پتہ چلا کہ میں نے عالمی ریکارڈ برابر کردیا ہے, تو بہت خوشی ہوئی کہ پاکستان اور میرا نام بھی ریکارڈ بک میں آگیا ہے
۔‘سرفراز احمد ہاشم آملہ کے کیچ کو ٹیم کے نقطہ نظر سے انتہائی اہم سمجھتے ہیں  ان کا کہنا تھا کہ یقیناً اے بی ڈی ویلیئرز نے بہت عمدہ بیٹنگ کی لیکن ہم لوگ یہی کہہ رہے تھے کہ اگر اے بی ڈی ویلیئرز قابو میں نہیں آرہے ہیں تو دوسرے اینڈ پر بیٹسمینوں کو آؤٹ کرنے کی کوشش کی جائے۔ اس صورتحال میں اے بی ڈی ویلیئرز بھی غلطی کرسکتے ہیں اور ان کی وکٹ بھی ہمیں مل سکتی ہے۔
سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ وہ یہاں کرکٹ کھیلنے آئے ہیں اور میڈیا میں ان کی کوچ وقاریونس سے لڑائی کی خبریں سامنے آنے پر وہ سخت حیران ہیں۔ایسا کوئی واقعہ نہیں ہوا ہے۔