سپریم کورٹ نے حکومت کی جانب سے ڈی جی ایف آئی اے وسیم احمد کو ہٹانے سے معذوری ظاہرکئے جانے کے بعد معاملے کو نوٹس لے لیا۔

سپریم کورٹ نے حکومت کی جانب سے ڈی جی ایف آئی اے وسیم احمد کو ہٹانے سے معذوری ظاہرکئے جانے کے بعد معاملے کو نوٹس لے لیا۔

سپریم کورٹ نے حکومت کی جانب سے ڈی جی ایف آئی اے وسیم احمد کو نہ ہٹانے کا نوٹس لے لیا ہے جبکہ کیس کی مزید سماعت آئندہ ہفتے ہوگی۔ اس سے پہلے سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ کی طرف سے سپریم کورٹ میں داخل کرائے گئے ایک صفحے کے جواب میں کہا گیا تھا کہ سیکیورٹی معاملات کے باعث فوری طور پر ایف آئی اے میں کوئی تبدیلی نہیں کی جا سکتی ۔ حکومت نے اپنے جواب میں واضح کیا کہ عدالت عظمٰی کے احکامات کو مدنظر رکھتے ہوئے ڈی جی ایف آئی اے وسیم احمد کو سپریم کورٹ میں زیر سماعت اہم مقدمات این آئی سی ایل سکینڈل، پاکستان سٹیل ملز، اور حج کرپشن کیس کی تحقیقات سے قطعی الگ کردیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے ہدایت کی تھی کہ حکومت ڈی جی ایف آئی اے کو تین دن میں فارغ کرے ۔