پرویز الٰہی نعشوں پر سیاست کر کے انتشار پیدا کرنا چاہتے ہیں: رانا مشہود

پرویز الٰہی نعشوں پر سیاست کر کے انتشار پیدا کرنا چاہتے ہیں: رانا مشہود

لاہور (خبرنگار) صوبائی وزیرقانون رانا مشہود احمد خان نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے پاکستان میں ترقی کے سفر کا آغاز کیا۔ پرویزالٰہی ترقی اور خوشحالی کا سفر روکنا چاہتے ہیں۔ قوم دہشت گردی کے خلاف متحد ہے مگر پرویزالٰہی نعشوں پر سیاست کر کے انتشار پیدا کر رہے ہیں۔ پرویزالٰہی کی پریس کانفرنس پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دھاندلی کے چیمپئن آج پھر چور دروازے سے اقتدار میں آنے کے لئے بیتاب ہیں۔ اقتدار کی بھیک پانے کے لئے مشرف کے بعد آج طاہرالقادری کے آستانے پر جا بیٹھے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پرویزالٰہی نے سانحہ لال مسجد کے بعد اپنے آقا مشرف سے استعفیٰ کیوں نہیں مانگا؟ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن منتشر خیالی کا شکار ہے۔ مخالفین کا کوئی ایجنڈا نہیں وہ محض ہوا میں تیر چلا کر شکار کرنا چاہتے ہیں۔ اقتدار سے محرومی پرویزالٰہی کے اعصاب پر سوار ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام جانتے ہیں کہ رسہ گیروں اور ڈاکوئوں کو پناہ دینا کس کا کام ہے؟پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا ہے کہ پرویز الٰہی جس سیاسی جماعت کا حصہ ہیں اس جماعت کو بنایا ہی ایک جرنیل نے تھا ۔ 2002میں ہونے والے انتخابات نے تو1977ء کے انتخابات میں ہونے والی دھاندلی کا بھی ریکارڈ توڑ ڈالا۔ انہوں نے کہا کہ 2002ء میں تو سرے سے مخالف امیدواروں اور جماعتوں کا وجود ہی مٹا دیا گیا ، خود ق لیگ کا اپنا وجود ہی دھاندلی کی بنیاد پر رکھا گیا۔ انہوں نے کہا کہ  آج مشرف کے کاسہ لیس جمہوریت کے چیمپئن بن کر انقلاب کی نوید سنا رہے ہیں۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ اس سے بڑا کیا مذاق ہوسکتا ہے کہ جو لوگ قومی تاریخ  کے سیاہ ترین دور کا حصہ رہے آج اُنہیں انسانی اور جمہوری حقوق یاد آرہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام نہ  تو لال مسجد بھولے ہیں اور نہ ہی مشرف کو باوردی منتخب کرنے کے دعوے ان کی یادداشت سے محو ہوئے ہیں ۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ جمہوریت، انقلاب اور انسانی حقوق کی بات کرنے سے پہلے بتایا جائے کہ کیا شیخ رشید ، پرویز الٰہی اور چوہدری شجاعت مشرف کا ساتھ دینے پر شرمندہ ہیں؟ انہوں نے کہا کہ کیا یہ لوگ لال مسجد میں بہائے جانے والے خون پر قوم سے معافی مانگنے  اور شفاف تحقیقات کا حصہ بننے پر آمادہ ہیں؟ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ قوم کو بتایا جائے کہ اگر اسمبلیاں دھاندلی کی پیداوار ہیں تو پھر اُن کا حصہ کیوں بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انقلاب اور سونامی عوامی مینڈیٹ پر شب خون نہیں مار سکتا۔
رانا مشہود/مشاہداﷲ