میرے والد عمران کے الزامات کا جواب جلد دینگے، قانونی راستہ اختیار کرینگے: ارسلان

میرے والد عمران کے الزامات کا جواب جلد دینگے، قانونی راستہ اختیار کرینگے: ارسلان

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کے فرزند ڈاکٹر ارسلان افتخار نے کہا ہے کہ عمران خان کے الزامات کے جوابات میرے والد جلد دینگے۔ اس سلسلے میں قانونی راستہ ہی اختیار کیا جائے گا۔ مجھے یا میری فیملی کو کوئی نقصان پہنچا تو ذمہ دار عمران خان ہونگے۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ایف آئی اے میں ڈیپوٹیشن پر گیا، ٹیلی کام اور آئی ٹی سیکٹر میں ملٹی نیشنل کمپنیز کے ساتھ کام کیا، سیاستدانوں نے کروڑوں روپوں کی کرپشن کے الزامات لگائے جن کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں۔ کاروبار کے دوران ٹیکس کٹ کر پیسے ملتے تھے، پاکستان اور بیرون ملک کوئی جائیداد ہے نہ پلاٹ۔ والد کرائے کے گھر میں رہتے ہیں۔ لاہور میں گھر زیرتعمیر ہے، کوئٹہ میں گھر کو بیچ کر لاہور میں ڈھائی کنال کا پلاٹ کینٹ میں لیا۔ میرے والد کا میرے کاروبار سے کوئی تعلق نہیں۔ ملک ریاض سے کوئی تعلق نہیں، والد نے عدالت میں کہا صفائی پیش کرنے تک گھر مت آنا، سکیورٹی کے پیش نظر بلوچستان ہائوس میں رہائش کا بندوبست کیا گیا۔ والد صاحب جب عدالت میں بیٹھتے تو بھول جاتے تھے ان کا کوئی بھائی، بیٹا ہے۔ اگر بیٹے نے کیش کرانا ہوتا تو اربوں کما لیتا۔ میں نے چیک کے ذریعے احمد خلیل کو ادائیگی کی۔ ٹریولنگ کا شوق ہے جو نہ کیا، جو کمایا خود پر لگا کے باہر گیا۔ ملک ریاض کا معاملہ ختم ہو چکا، ہمیں نہیں معلوم ملک ریاض کے بیٹے پر حادثے پر 302 کی دفعہ کیوں لگی۔ وائس چیئرمین انوسٹمنٹ بورڈ بنانے میں وفاقی حکومت کا کوئی کردار نہیں تھا۔ مختلف شعبوں میں اربوں کی سرمایہ کاری لا رہے تھے، میری چوتھی نسل بلوچستان میں مٹی  کا قرض کوئی کام کر کے اتارنا چاہتا تھا۔ ریکوڈک منصوبے سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ حلفاً کہتا ہوں وزیراعظم کا میری تقرری سے کوئی تعلق نہیں۔ میں نے سرمایہ کاری کیلئے پالیسی پیپر تیار کیا اور آئیڈیاز دیئے۔ میرے والد نے بکنا ہوتا تو 9 مارچ کو بکتے اور جھکنا ہوتا تو تین نومبر کو جھک جاتے لیکن ایسا نہیں کیا۔ ارسلان نے کہا کہ عمران کو بلیک میل نہیں کر رہا، جن آر اوز کے خلاف انہوں نے زبان استعمال کی خیبر پی کے میں بھی وہی آر اوز ہیں، اس طرح عمران پر بھی مہربانی ہوئی، ان کے نامزدگی فارم قبول کئے۔ وہ شیشے کے گھر میں بیٹھ کر پتھر مار رہے ہیں۔ ایک سوال پر کہا کہ مراد سعید سے  ہاتھا پائی نہیں ہوئی، ہوتی تو چوڑیاں نہیں پہن رکھی تھیں۔ یہ وہ سوچ ہے جب دلیل نہ ہو تو مارکٹائی کرو۔ عمران خان سے غائبانہ تعلق واسطہ بھی نہیں۔
ارسلان افتخار