نواز شریف انتہائی سنجیدہ دکھائی دئیے، شہباز شریف مبارکبادیں وصول کرتے رہے

نواز شریف انتہائی سنجیدہ دکھائی دئیے، شہباز شریف مبارکبادیں وصول کرتے رہے

لاہور (فرخ سعید خواجہ) قائداعظم سولر پارک میں 100 میگاواٹ بجلی پیدا کرنے والے منصوبے کی تکمیل پر منعقدہ تقریب میں وزیراعظم محمد نواز شریف بہت سنجیدہ دکھائی دے رہے تھے تاہم جب وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے قائداعظم سولر پارک میں عدم تعاون کرنے والے سرمایہ کاروں کے علاوہ ان لوگوں کا ذکر کیا جوکہ پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کی بجائے سرمایہ بیرون ملک لے جاتے ہیں انہوں نے جوش و جذبات سے لبریز لہجے میں وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا کہ ایسے لوگوں کو اٹھا کر بحیرہ عرب میں پھینک دیں۔ اس انداز پر نواز شریف بے اختیار ہنس پڑے۔ میاں شہباز شریف جنوبی پنجاب میں لگائے جانے والے اس پلانٹ کو جنوبی پنجاب کے لوگوں کے لئے خوشحالی کا پیغام قرار دیتے رہے انہوں نے خوشگوار موڈ میں بتایا کہ وہ بہاولپور اور گرد و نواح میں انڈسٹریل اسٹیٹ قائم کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ اسے نہ صرف یہاں پیدا ہونے والی سولر بجلی سے سنگل شفٹ میں چلایا جا سکے گا بلکہ اس سے بہاولپور سے رحیم یار خان اور ادھر بہاولنگر تک کے لوگوں کو روزگار کے مواقع حاصل ہوں گے۔ وزیراعلی پنجاب کو اس منصوبے کی تکمیل پر وفاقی وزراء اور وزرائے مملکت آگے بڑھ بڑھ کر مبارکباد دیتے رہے۔ تاہم اس تقریب میں وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر پرویز رشید اداس اداس اور الگ تھلگ دکھائی دیئے۔ بہاولپور سے تعلق رکھنے والے وفاقی وزیر ریاض حسین پیرزادہ، وزیرمملکت شیخ بلیغ الرحمن، صوبائی وزیر ملک محمد اقبال چنڑ اور وزیراعلی کے پبلک افیئرز یونٹ کے کرتا دھرتا سعود مجید بہت شاداں دکھائی دیتے تھے۔ ان کا صحافیوں سے کہنا تھا کہ ان کے علاقے میں خوشحالی کے منصوبے کو تیز رفتاری سے مکمل کرنے کا یہ پہلا موقع ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دسمبر تک اس پلانٹ سے مزید 300 میگاواٹ بجلی پیدا ہونے لگے گی۔