مسلم لیگ ن کا الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان

خبریں ماخذ  |  خصوصی نامہ نگار
مسلم لیگ ن کا  الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج  کرنے کا اعلان

وزیراعظم کی زیرصدارت مسلم لیگ ن کے مشاورتی اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے وزیر برائے منصوبہ بندی اور ترقی احسن اقبال کا کہنا تھا کہ ٹربیونل نے حلقےمیں کہیں منظم دھاندلی کا  ذکر نہیں کیا،سعد رفیق کی شدید خواہش تھی کہ وہ ٹرییونل کے فیصلے کے بعد ری الیکشن کے لیے عوامی عدالت میں جائیں  تاہم قانونی ماہرین سے مشورے کے بعد ٹربیونل کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا فیصلہ کیا ہے، فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کی صورت میں غلط روایت پڑجاتی-
انہوں نے ایک بار پھر کپتان کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سیاسی عدم استحکام عمران خان کا ایجنڈا ہے، وہ حکومت کے معاشی لائحہ عمل کو ناکام بنانا چاہتے ہیں،  پاک چین اقتصادی راہداری پرعملدرآمدشروع ہواتو عمران خان پھرمتحرک ہوگئے، عمران خان کی کوشش ہے کہ سرمایہ کاروں کو پاکستان آنے سے روکا جائے۔
اس موقع پر پرویز رشید کا کہنا تھا کہ مشاورتی اجلاس میں تمام نکات پر غور کیا، ماہرین اور رفقا کی رائے کو بھی وزیراعظم نے سنا، سعد رفیق نے الیکشن لڑنے کی ہی تجویز دی ، پریس کانفرنس کے دوران  تین بار بجلی چلی گئی، جس کے باعث بریفنگ تعطل کا شکار ہوئی-