بھارت ایٹمی جنگ کی تیاری کررہاہے‘ جامع مذاکرات سے انکار سمجھ سے بالاتر ہے : سلمان بشیر

اسلام آباد (آئی این پی + ریڈیو مانیٹرنگ) سیکرٹری خارجہ سلمان بشیر نے کہا ہے کہ جامع مذاکرات کی بحالی سے بھارتی انکار سمجھ سے بالاتر ہے‘ پاکستان بھارت کے ساتھ جامع مذاکرات کی بحالی چاہتا ہے جبکہ بھارت اس کے لئے تیار نہیں اور صرف ایک نکتہ پر بات کرنا چاہتا ہے‘ طے شدہ ایجنڈے کے بغیر مذاکرات مثبت صورتحال پیدا نہیں کر سکتے‘ حافظ سعید سمیت ممبئی حملوں کے ملزموں کے خلاف معاملات عدالتوں میں زیر سماعت ہیں‘ حکومت یا دفتر خارجہ اس حوالے سے کوئی ٹائم فریم دینے کی پوزیشن میں نہیں‘ عدالتیں آزادانہ طور پر کام کرتے ہوئے جلد از جلد اس معاملے کو نمٹا دیں گی‘ بھارت نہ صرف جارحانہ دفاعی تیاریوں میں مصروف ہے بلکہ ایٹمی جنگ کی بھی تیاری کر رہا ہے۔ جمعہ کے روز غیر ملکی سفیروں کو پاکستان بھارت مذاکرات کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان سمجھتا ہے کہ اگر خطے میں دیرپا امن درکار ہے تو اس کیلئے پاکستان اور بھارت دونوں کو جامع مذاکرات بحال کرنا ہونگے۔ غیر ملکی سفیروں کو سیکرٹری خارجہ نے امن اور خطے میں سکیورٹی کی صورتحال بھارت کی جانب سے دفاعی بجٹ میں اضافے کے حوالے سے پاکستان کے تحفظات سے بھی آگاہ کیا اور بتایا کہ اس سے خطے میں عدم استحکام پیدا ہو گا۔ سیکرٹری خارجہ نے غیر ملکی سفیروں کو پانی اور دیگر معاملات کے حوالے سے بھارت کو جو ڈوزیئر دیئے ان پر اعتماد میں لیا۔ دریں اثناءسلمان بشیر اور بھارت میں متعین پاکستانی ہائی کمشنر شاہد ملک نے رحمن ملک سے ملاقات کی ہے جس میں انہوں نے سیکرٹری خارجہ سطح کی ہونے والی بات چیت کے موقع پر بھارت کی طرف سے دیا جانے والا ڈوزیئر رحمن ملک کے حوالے کر دیا ہے۔ اس ڈوزیئر میں بھارت نے ممبئی حملوں کے حوالے سے مبینہ طور پر کچھ نئی معلومات اور مطالبات کئے ہیں‘ ڈوزیئر میں کہا گیا ہے ان حملوں کے موقع پر دہشت گردوں کی جن افراد سے بات چیت ہوئی ہے اور کمپیوٹر کے ذریعہ رابطہ رہا ہے ان کے نئے آئی پی ایڈریسز کا پتہ چلا ہے۔