پاکستان بھارت کو کئی برس قبل عملاً پسندیدہ ترین کا ”درجہ عطا“ کر چکا

لاہور (خبرنگار) بھارت کو پسندیدہ ملک قرار دینے سے پہلے ہی پاکستانی حکومت نے بھارت کو عملی طور پر یہ ”درجہ عطا“ کر رکھا ہے۔ واہگہ بارڈر پر ہونیوالی غیرروایتی تجارت کا تمام تر فائدہ بھارت اٹھا رہا ہے۔ گذشتہ مالی سال میں یکم جولائی 2010ءسے 30جون 2011ءتک بھارت سے 31ہزار 897 ٹرکوں پر 20ارب 99کروڑ 45لاکھ روپے کا سامان پاکستان آیا جبکہ پاکستان نے 4664 ٹرکوں پر ایک ارب 33کروڑ 6لاکھ روپے کا سامان بھارت برآمد کیا۔ رواں مالی سال کے پہلے 4ماہ میں بھارت سے 8643ٹرکوں پر 5ارب 27کروڑ 31لاکھ روپے کا سامان پاکستان پہنچ چکا ہے جبکہ پاکستان کی برآمدات صرف 77کروڑ 35لاکھ روپے کی ہیں۔ پاکستان بھارت سے سب سے زیادہ سویابین درآمد کرتا ہے جو گذشتہ مالی سال میں تیرہ ارب 14کروڑ 14لاکھ روپے رواں مالی برس میں دو ارب 90کروڑ 68لاکھ روپے کا درآمد کیا جا چکا ہے۔