ڈکٹیٹروں کی کرتوتوں کا حساب دینا ہو گا‘ عوام انہیں قانون سے بھاگنے نہیں دینگے : زرداری

ڈکٹیٹروں کی کرتوتوں کا حساب دینا ہو گا‘ عوام انہیں قانون سے بھاگنے نہیں دینگے : زرداری

 اسلام آباد (این این آئی) سابق آصف زر داری نے کہا ہے کہ ڈکٹیٹروں کو اپنے کرتوتوں کا حساب دینا ہوگا، قانون سے بھاگنے نہیں دیں گے، طالبان اور دہشت گردوںکے گروپ قائد عوام کی حکومت پر فوجی قبضہ کا براہ راست نتیجہ ہیں، عسکریت پسندوں اور انتہاپسندوں کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے اور بندوق کے زور پر اپنا مسخ شدہ ایجنڈہ مسلط کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ ذو الفقار علی بھٹو کے قتل کے پاکستان اور دنیا پر گہرے اثرات پڑے، ذوالفقار علی بھٹو جہالت، غربت کے اندھیروں سے نجات دلانے کیلئے آگے بڑھے، شہید بھٹو نے ملک کو ایک اسلامی، وفاقی، جمہوری، ہمہ جہت اور متفقہ آئین دیکر پاکستان کو ایک جدید ریاست بنانے کی داغ بیل ڈالی۔ سابق صدر زرداری نے ذوالفقار علی بھٹو کی سالگرہ کے موقع پر اپنے پیغام میں قائد عوام کو خراجِ عقیدت پیش کرتے ہوئے انکے نام کی نسبت سے انہیں حضرت علیؓ کی تلوار اور عظیم شخصیت قرار دیا۔ حال ہی میں عوام کو مقبول لیڈر اور ڈکٹیٹر کا فرق واضح ہوگیا جب انہوں نے خود دیکھ لیا کہ مقبول لیڈر نے پھانسی کے پھندے کو گلے لگا لیا جبکہ ایک ڈکٹیٹر عدالتوں کا سامنا کرنے سے خوفزدہ ہوگیا۔ اسلام کی روح کے مطابق ذوالفقار علی بھٹو جہالت، غربت کے اندھیروں سے نجات دلانے کیلئے آگے بڑھے۔ 1973ءمیں بنائے گئے اس آئین کے تحت اقتدار پر فوجی قبضہ کرنے کو غداری قرار دیا گیا۔ آئیں قائدعوام کے اس یوم پیدائش پر عہد کریں کہ ڈکٹیٹروں کو ان کے کرتوتوں کا حساب دینا ہو گا اور انہیں قانون سے بھاگنے نہیں دیا جائے گا۔ آصف زرداری نے کہا کہ قائد عوام کو تو پھانسی دے دی گئی لیکن حق اور خوبصورتی کو پھانسی نہ دے سکے۔ جن ججوں اور جنرلوں نے موت کے پروانے پر دستخط کئے اور اس پر عملدرآمد کروایا وہ ہمیشہ کے لئے پھانسی چڑھ گئے اور تاریخ میں قابلِ مذمت قرار پائے۔
زرداری