’’طالبان سے مذاکرات کا حصہ بننا ہے یا نہیں‘‘ جماعت اسلامی نے آج اجلاس بلا لیا

’’طالبان سے مذاکرات کا حصہ بننا ہے یا نہیں‘‘ جماعت اسلامی نے آج اجلاس بلا لیا

 لاہور ( خصوصی نامہ نگار ) ترجمان جماعت اسلامی نے کہا ہے کہ طالبان اور حکومت کے درمیان مذاکرات پر تحفظات ہیں۔ نجی ٹی وی کے مطابق فرید احمد پراچہ کا کہنا ہے کہ مذاکرات کا حصہ رہیں گے یا نہیں آج اسلام آباد میں اجلاس طلب کرلیا جس میں جائزہ لیں گے کہ مذاکرات میں ہمارا کردار بنتا ہے یا نہیں برائے نام مذاکرات کا حصہ نہیں بن سکتے۔ دیکھنا ہے کہ حکومتی ٹیم کے پاس مینڈیٹ ہے یا نہیں۔ فرید پراچہ نے ایک نجی ٹی وی چینل سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ طالبان اور حکومتی مذاکراتی کمیٹویں کے درمیان ڈیڈ لاک سے ایک نئی صورتحال پیدا ہو گئی ہے جس میں جماعت کو مذاکرات کے حوالے سے ازسرنو فیصلہ کرنا پڑیگا۔ذرائع کے بعد جماعت اسلامی کے بعض سینئر ارکان کا کہنا ہے کہ جماعت اسلامی کا بالواسطہ یا بلاواسطہ تحریک طالبان پاکستان سے کوئی رابطہ نہیں ایسی صورت میں طالبان کی مذاکراتی کمیٹی کا حصہ بننا جماعت اسلامی کیلئے آزمائش بن سکتا ہے۔ جماعت اسلامی کے ترجمان ڈاکٹر فرید پراچہ کے مطابق طالبان کی نامزد کردہ کمیٹی کا کردار رابطہ کار سے زیادہ نہیں کوئی رکن کس طرح طالبان کے حوالے سے وضاحت دے سکتا ہے۔