یوم یکجہتی کشمیر آج منایا جائے گا‘ ریلیاں‘ سیمینار ہوں گے‘ انسانی ہاتھوں کی زنجیریں بنیں گی

یوم یکجہتی کشمیر آج منایا جائے گا‘ ریلیاں‘ سیمینار ہوں گے‘ انسانی ہاتھوں کی زنجیریں بنیں گی

لاہور+ اسلام آباد (خصوصی نامہ نگار+ خصوصی رپورٹر + نیوز رپورٹر + ایجنسیاں) لائن آف کنٹرول کے دونوں اطراف آزاد کشمیر سمیت پاکستان بھر میں اور دنیا بھر میں (آج) 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر روایتی جوش و جذبے سے منایا جائیگا۔ آزاد کشمیر اور پاکستان کے مختلف شہروں میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے ملک کی دینی و سیاسی جماعتوں کی جانب سے جلوس و ریلیاں نکالی جائیں گی، سیمینارز منعقد ہوں گے اور انسانی ہاتھوں کی زنجیریں بنائی جائیں گی۔ آج ملک بھر میں عام تعطیل ہوگی۔ اس موقع پر اسلام آباد میں کل جماعتی حریت کانفرنس اور قومی اسمبلی کی خصوصی کشمیر کمیٹی کا وفد اقوام متحدہ کے دفتر میں یو این او کی قراردادوں کے تحت کشمیر میں استصواب رائے کرانے کے مطالبے پر مشتمل پارلیمنٹ کی جانب سے یادداشت پیش کریگا جبکہ آزاد کشمیر اور پاکستان کو ملانے والے کوہالہ پل کے دونوں جانب انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنائی جائیگی جس میں آزاد کشمیر اور پاکستانی قائدین شرکت کریں گے۔ لاہور میں سرکاری اور غیر سرکاری سطح پر تقریبات، ریلیوں اور جلسوں کا انعقاد کیا جائے گا۔ وزیراعظم ڈاکٹر نواز شریف (آج) شام حریت کانفرنس کے قائدین سے ملاقات کریں گے اور ان کے اعزاز میں عشائیہ دیں گے۔ اس طرح برطانیہ، امریکہ، کینیڈا کے بڑے شہروں سمیت اوسلو، برسلز اور جنیوا میں بھی کشمیری تارکین وطن کی تنظیمیں حق خودارادیت کی حمایت اور بھارتی مظالم کے خلاف ریلیاں نکالیں گی جن میں کشمیری اور پاکستانی تارکین وطن کی بڑی تعداد شرکت کرے گی۔ کشمیری شہداء کی یاد میں صبح نو بجے ملک بھر میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائیگی۔ صدر ممنون حسین، وزیراعظم ڈاکٹر نوازشریف، وزیراعلی پنجاب شہبازشریف، سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق، وفاقی وزیر امور کشمیروگلگت بلتستان چودھری برجیس طاہر، جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان، جماعت اسلامی کے رہنما لیاقت بلوچ اور دیگر رہنمائوں نے یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر اپنے الگ الگ پیغام میں کہا ہے کہ کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کا حل خطے کے امن کیلئے بہت ضروری ہے اور مسئلہ حل نہ ہونے تک خطے میں امن نہیں ہو سکتا۔ جبروتشدد کے ذریعے زیادہ دیر تک کشمیریوں کو ان کے بنیادی حقوق سے محروم نہیں رکھا جا سکتا۔ اقوام متحدہ اور عالمی برادری کشمیریوں سے کئے گئے وعدوں کی پاسداری کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر حل کرائے۔ دریں اثناء جماعۃ الدعوۃ پاکستان کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر آج مرکز القادسیہ چوبرجی سے مسجد شہداء مال روڈ تک بڑا کشمیر کارواں نکالا جائیگا جس کے اختتام پر بڑا جلسہ منعقد ہوگا جس میں لاہور اور اسکے گردونواح سے مختلف مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد شرکت کریں گے۔ اسی طرح اسلام آباد، ملتان، کراچی، حیدرآباد، فیصل آباد اور دیگر شہروں سمیت پورے ملک میں تحصیل کی سطح پر کشمیرکارواں، جلسوں اور سیمینارز کا انعقاد کیا جائے گا۔ امیر جماعۃ الدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ سعید نے پاکستانی قوم سے اپیل کی ہے کہ وہ مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے سلسلہ میں کراچی سے پشاور تک ملک کے کونے کونے میں ہونے والے جلسوں، کانفرنسوں اور کشمیر کارواں میں بھرپور انداز میں شریک ہوں۔ این این آئی کے مطابق حساس اداروں کی رپورٹس کے پیش نظر آج یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر سکیورٹی ہائی الرٹ رہے گی ۔ پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو جاری کئے گئے مراسلے میں کہا گیاہے کہ کسی بھی ممکنہ نا خوشگوار واقعہ سے بچنے کیلئے سکیورٹی کے فول پروف انتظامات کئے جائیں۔ علاوہ ازیں جماعۃ الدعوۃ فیصل آبادکے زیر اہتمام یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر آج بدھ کو جی ٹی ایس چوک تا گھنٹہ گھرچوک (کچہری بازار) تک بڑا یکجہتی کشمیر کارواں نکالا جائیگا جس میں فیصل آباد اور اس کے گردونواح سے مختلف مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد شرکت کریں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ بہادر کشمیری عوام حق خود ارادیت کے حصول کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں۔ مسلم لیگ (ن) نے اپنے ہر دور حکومت میں ملکی اور بین الاقوامی فورم پر کشمیر کے مسئلے کو بھرپور طریقے سے اجاگر کیا۔ آئندہ بھی کشمیریوں کے حق کیلئے آواز اٹھاتے رہیں گے اور کشمیری بھائیوں کی ہر سطح پر اخلاقی، سفارتی اور سیاسی حمایت جاری رکھیں گے۔ پاکستانی عوام نے ہمیشہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض افواج کی ظلم و زیادتی اور انسانی حقوق کی پامالی کے خلاف آواز اٹھائی ہے اور آج بھی یوم یکجہتی کے موقع پر پاکستانی قوم اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ مقبوضہ کشمیر پر بھارت کا غاصبانہ قبضہ اور کشمیریوں کو حق خود ارادیت سے محروم رکھنا ہر لحاظ سے قابل افسوس ہے۔ پاکستان اور بھارت کے تمام تنازعات کے خاتمے کیلئے بھی کشمیر کا مسئلہ کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق حل ہونا چاہئے۔ سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے کہا ہے مسئلہ کشمیر جنوبی ایشیا اور امن کے لئے ہی خطرہ نہیں، پوری دنیا اس سے متاثر ہے، کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کا پرامن حل خطے کے امن اور ترقی کے لئے بے حد ضروری ہے۔ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ کشمیر کمیٹی نے دو وفدتشکیل دیئے ہیں جو 5 فروری کو اقوام متحدہ میں اپنی یادداشت پیش کریں گے اور کوہالہ کے مقام پر انسانی ہاتھوں کی زنجیر بنائیں گے۔ پاکستان کے تمام ادارے اور قوم کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی مکمل حمایت میں ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ صدر ممنون حسین اور وزیراعظم نوازشریف نے حکومت پاکستان اور عوام کی طرف سے کشمیریوں کی سیاسی‘ سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اقوام متحدہ اور عالمی بردری کشمیریوں سے کئے گئے وعدے کی پاسداری کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر حل کرائے‘ بھارت کو جامع اور نتیجہ خیز مذاکرات کی دعوت دیتے ہیں تاکہ کشمیر سمیت تمام مسائل حل کئے جائیں‘ پاکستان کشمیریوں کو حق خودارادیت ملنے تک ان کا پورا ساتھ دے گا۔ صدر نے کہا کہ ہر سال 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر ہم اپنے کشمیری بھائیوں کے بنیادی حقوق بشمول حق خودارادیت کیلئے اپنی اخلاقی‘ سیاسی اور سفارتی حمایت کی تجدید کرتے ہیں۔ آج پاکستان کے عوام ان کشمیری بھائیوں اور بہنوں کی اپنے حق خودارادیت کیلئے جرات مندانہ جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جنہوں نے اس جدوجہد میں بے شمار قربانیاں دی ہیں۔ آج ہم ان کشمیری بھائیوں کی جرات کو بھی سلام پیش کرتے ہیں جنہوں نے آزادی کا پرچم بلند رکھنے اور اپنے وقار اور عظمت کی خاطر قربانیاں دیں۔ وزیراعظم نے اپنے پیغام میں کہا کہ آج ہم اپنے اس عزم کو بھی دہراتے ہیں کہ ہم اپنے کشمیری بھائیوں اور بہنوں کی اپنے حق کے لئے جدوجہد میں ان کا بھرپور ساتھ دیں گے۔ جموں و کشمیر کے پرامن شہری آج بھی ظلم و زیادتی کا شکار ہیں نہ صرف یہ کہ انہیں حق خودارادیت سے محروم رکھا جا رہا ہے بلکہ ان کے حقوق کی پامالی کی جا رہی ہے اور انہیں ظلم و زیادتی کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ لیکن تمام تر مظالم کے باوجود انہیں اپنے اس حق خودارادیت کے لئے جدوجہد سے روکا نہیں جا سکا۔ یقیناً مسئلہ کشمیر کا کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق پر امن حل جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن کے لئے ازحد ضروری ہے۔ سانگلہ ہل سے نمائندہ نوائے وقت) کے مطابق وفاقی وزیر برجیس طاہر نے کہا ہے کہ وزیراعظم ڈاکٹر نواز شریف کشمیری قائدین سے ملاقاتیں کرینگے، وزیر اعظم محمد نواز شریف یوم یکجہتی کشمیر کے موقعہ پر آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی و کونسل کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرینگے، پاکستان مذاکرات کے ذریعے مسئلہ کشمیر کا حل چاہتا ہے،خطے میں امن و امان کیلئے مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے، بھارت کی اٹوٹ انگ کی رٹ ایک فضول مشق ہے۔ علاوہ ازیں امیر جماعت اسلامی منورحسن نے اپنے خصوصی پیغام میں اس امید کا اظہار کیا ہے کہ آج ملت اسلامیہ پاکستان اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے تاریخی اور شاندار کردار ادا کریگی اور متحد ہوکر عالمی برادری کی توجہ کشمیر کے مسئلہ کے حل کی جانب مبذول کروانے کی ہرممکن کوشش کریگی۔ حکمران بھارت کی بالادستی قبول کرکے اس سے دوستی کی پینگیں بڑھانے کیلئے کشمیر کے مسئلہ کو پس پشت ڈال چکے ہیں اور آلو پیاز کی تجارت اور اپنی چینی فروخت کرنے کیلئے کشمیریوں کی 66 سالہ جدوجہد آزادی پر پانی پھیردیا ہے۔ علاوہ ازیں ملی یکجہتی کشمیر پر عمران خان نے اپنے پیغام میں کہا کہ عالمی برادری اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیر کے سیاسی حل کی جانب راہ ہموار کریں اہل کشمیر کی جدوجہد آزادی کو سلام پیش کرتا ہوں ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے بھی اپنے پیغام میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیا ہے۔  لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ کشمیر پر بھارت کا ناجائز اور غاصبانہ قبضہ ہے، کشمیر پاکستان کی شہ رگ اور رگ جاں ہے، امریکہ افغانستان میں شکست کھا رہاہے، بھارت کی کشمیر میں شکست نوشتہ دیوار ہے۔ علاوہ ازیں جماعت اہلحدیث کے زیر اہتمام آج جامعہ دارالقدس چوک دالگراں لاہور میں سیمینار کا انعقاد کیا جائے گا۔ سیمینار کی صدارت حافظ عبدالغفار روپڑی کریں گے۔ علاوہ ازیں اہلسنت والجماعت بھی آج ملک بھر میں یوم یکجہتی کشمیر منائے گی، علامہ احمد لدھیانوی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہندو بنیا کشمیری عوام پر مظالم ڈھا رہا ہے ایسے میں اقوام متحدہ سمیت انصاف کے علمبرداروں کی خاموشی مسلم دشمنی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ علاوہ ازیں تحریک آزادی جموںکشمیر آج لاہور سمیت پورے ملک میں جلسوں، کانفرنسوں، کشمیر کاررواں اور ریلیوں میں بھرپور انداز میں شریک ہو گی۔