لاہور : 13 ریٹرننگ افسروں نے پولنگ ریکارڈ کا جائزہ لیا‘ اکثر تھیلے پھٹے ہوئے‘ فارم پندرہ موجود نہیں

لاہور : 13 ریٹرننگ افسروں نے پولنگ ریکارڈ کا جائزہ لیا‘ اکثر تھیلے پھٹے ہوئے‘ فارم پندرہ موجود نہیں

لاہور (وقائع نگار خصوصی) صوبائی دارالحکومت لاہور کے13ریٹرننگ افسروں نے گزشتہ روز 2013ءکے عام انتخابات کے پولنگ ریکارڈ کو جوڈیشل کمشن بھجوانے سے قبل گزشتہ روز اس کا جائزہ لیا۔ اس عمل کے دوران ریٹرننگ افسروں کو پولنگ ریکارڈ کے اکثر تھیلے پھٹے ہوئے ملے جبکہ ان میں فارم 15موجود نہیں تھے۔ قبل ازیں لاہور کے13قومی اور 25صوبائی حلقوں کا ریکارڈ سنٹرل ماڈل سکول میں یکجا کر دیا گیا تھا۔ ریٹرنگ افسروں نے جائزے کے دوران سب سے زیادہ توجہ انتخابات میں استعمال ہونے والے بیلٹ پیپروں کی تعداد ظاہر کرنے والے فارم15کی تلاش پر صرف کیا ۔ ریٹرننگ افسر ریکارڈ کا جائزہ مکمل کرکے رپورٹ ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسر طارق افتخار احمد کو پیش کریں گے جو اپنی رائے کے ساتھ ان رپورٹس کو 8جون سے قبل اسلام آبا دمیں جوڈیشل کمشن کو بھجوا دیں گے۔گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی اور دیگر شہروں سے نمائندگان کے مطابق پولنگ بیگز کھول کر فارم 15 نکالنے کا عمل جاری ہے۔ پاکپتن میں تھیلے کھول کر انتخابی مواد جمع کرنے کا عمل شروع کر دیا گیا۔ شورکوٹ کے حلقہ پی پی79 اور حلقہ پی پی80 کے ووٹوں کے تھےلوں میں سے فارم نمبر15نکالنے کیلئے ووٹوں کے تھےلے کھولے گئے۔ بہاولپور میں بیلٹ پیپروں کے تھیلے کھول کر فارم 15 اور 16 کی جانچ پڑتال کی۔ یہ آج بھی جاری رہیگا جس دوران ضلع بھر کے 5 قومی اور 10 صوبائی حلقوں کے تھیلے کھولے جائیں گے۔ گوجرانوالہ الیکشن کمشن نے فارم نمبر15 کی پڑتال کیلئے ووٹوں سے بھرے تھیلے سخت سکیو رٹی میں ریٹرننگ افسروں کو پہنچا دئیے۔ ووٹوں کے تھیلوں کی منتقلی کے دوران بیشتر تھیلے پھٹے اور انکے منہ کھلے ہوئے تھے تاہم ریٹرننگ افسر الیکشن کمشن کے عام انتخابات کے رزلٹ کو فارم نمبر15 پر درج ووٹوں سے چیک کرکے 3 روز میں اپنی رپورٹ جو ڈیشل کمشن کو پیش کریں گے۔ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن سیالکوٹ شاہد رفیق نے سیالکوٹ اور پسرور میں تھیلے کھلوائے اور ان میں سے فارم 15 حاصل کئے۔

فارم 15موجود نہیں