بھارت کیساتھ برابری کی سطح پرتعلقات چاہتے ہیں: صدرممنون

خبریں ماخذ  |  خصوصی نامہ نگار
بھارت کیساتھ برابری کی سطح پرتعلقات چاہتے ہیں:  صدرممنون

موجودہ پارلیمان نے دوسرے مشترکہ پارلیمانی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت نے قوم اور پارلیمینٹیرینز کو موجودہ جمہوری عہد کا دوسرا پارلیمانی سال کامیابی سے مکمل ہونے پر مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے واضح کیا کہ گزشتہ سال پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کی کارکردگی ماضی کے مقابلے میں کہیں بہتر رہی۔ ممنون حسین کا کہنا تھاکہ ہم دہشت گردوں اور اُن کے سرپرستوں پر واضح کرتے ہیں کہ آخری دہشت گرد کے خاتمے تک یہ آپریشن جاری رہے گا۔ خواہ یہ دہشت گرد فاٹا اور قبائلی علاقوں میں سرگرم ہوں یا کراچی یا ملک کے کسی اور حصے میں۔ انہیں ہر صورت میں کیفرِ کردار تک پہنچایا جائے گا۔

صدر مملکت نے کہا کہ دہشت گردی کے باعث بے گھر پاکستانیوں کی اپنے گھروں میں دوبارہ آبادکاری کے لیے حکومت نے اچھے منصوبے بنائے اور فراخ دلی سے فنڈز مختص کیے۔

ممنون حسین نے واضح کیا کہ امن و امان کی بحالی کا کام بڑی احتیاط اور تیز رفتاری کے ساتھ کیا جائے، گزشتہ چند برسوں کے دوران پولیو ایک اُبھرتے ہوئے خطرے کے طور پر سامنے آیا ہے جس سے نمٹنے کے لیے کوشاں ہیں۔

پاکستان چین اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت بجلی کی پیداوار کے عظیم الشان منصوبے بھی روبہ عمل ہیں۔ کاشغر کو گوادر سے ملانے والی شاہرات اور اس کے بعد ریلوے لائن کا خواب بھی شرمندہ تعبیر ہونے جا رہا ہے۔

ممنون حسین کا کہنا تھا کہ بطور پُرامن قوم پوری دنیا،پاکستانی بالخصوص اپنے پڑوسیوں کے ساتھ برابری کی بنیاد پر دوستانہ تعلقات کے خواہش مند ہیں۔ یہ ہمارے خلوص ہی کا نتیجہ ہے کہ افغانستان کی موجودہ حکومت کے ساتھ تعلقات کے نئے دور کا آغاز ہوا ہے۔