کرپٹ حکومت کیخلاف متحدہ سمیت تمام جماعتوں کو گرینڈ اپوزیشن میں شمولیت کی دعوت دیتے ہیں : شہباز شریف

لندن/ لاہور (آصف محمود سے+ ریڈیو مانیٹرنگ+ خبرنگار خصوصی+ آئی این پی) وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ موجودہ کرپٹ حکومت سے نجات کے لئے اپوزیشن جماعتوں کا گرینڈ الائنس بہت ضروری ہے، ایم کیو ایم سمیت تمام جماعتوں کو گرینڈ اپوزیشن الائنس میں شمولیت کی دعوت دیتے ہیں، مسلم لیگ (ن) کی جانب سے مذاکرات کے لئے کوئی شرط نہیں، ملکی حالات انتہائی خطرناک صورتحال اختیار کر چکے، ایم کیو ایم سمیت تمام جماعتوں کو متحد ہوکر سوچنے کی ضرورت ہے۔ وہ اتوار کو لندن پہنچنے کے بعد ہیتھرو ائرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ گرینڈ الائنس کے لئے ایم کیو ایم سمیت تمام جماعتوں کو ویلکم کہیں گے۔ الطاف سے ملاقات کے حوالے سے سوال کے جواب میں شہبازشریف نے کوئی مثبت یا منفی جواب نہیں دیا۔ انہوں نے کہا کہ مذاکرات کیلئے تمام جماعتوں کیلئے دروازے کھلے ہیں۔ وزیراعلیٰ 4 جولائی سے 8 جولائی کے سرکاری دورے میں وزیراعظم برطانیہ ڈیوڈ کیمرون، وزیر داخلہ سمیت دیگر برطانوی حکام سے ملاقاتیں کریں گے۔ شہبازشریف کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کے وجود کو بچانے کیلئے میدان عمل میں کود جانے کا وقت ہے۔ دورہ برطانیہ کا مقصد سرمایہ کاری میں تعاون کو مزید فروغ دینا ہے۔ اس موقع پر رانا ثناءاللہ کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کو اپوزیشن میں خوش آمدید کہتے ہیں ان کا کہنا تھا کہ گرینڈ اپوزیشن الائنس کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے کہاکہ آزاد کشمیر میں بدترین دھاندلی ہوئی ہے، دوبارہ انتخابات کرائیں جائیں۔ انہوں نے کہا کہ شہبازشریف کے دورہ سے برطانیہ اور حکومت پنجاب میں تعلقات کے نئے باب کا آغاز ہو گا۔ آئی این پی کے مطابق شہبازشریف کا لندن پہنچنے پر مسلم لیگ (ن) برطانیہ کے رہنماﺅں نے پُرتپاک خیرمقدم کیا ۔ شہباز شریف نے پاکستان کی صورتحال کو انتہائی ابتر قرار دیتے ہوئے کہا کہ نااہل اور کرپٹ حکمرانوں نے ملک کو تباہی کے کنارے پر پہنچا دیا ہے اور اگر اس حکومت سے نجات حاصل نہ کی گئی تو ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کرپٹ اور نااہل حکومت سے نجات کیلئے اپوزیشن جماعتوں کا گرینڈ الائنس بہت ضروری ہے، شہباز شریف نے ایک سوال پر کہا کہ ان کی اس دورہ کے دوران الطاف حسین سے ملاقات خارج ازامکان ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے اس دورہ کے دوران برطانوی حکام سے ملاقاتوں میں پنجاب میں زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری کی راہ ہموار کرنے کی کوشش کریں گے۔شہباز شریف لندن میں اپنے قیام کے دوران نائب برطانوی وزیراعظم‘ برطانوی حکمران جماعت کی چیئرپرسن سعیدہ وارثی سے ملاقات کریں گے۔ لندن میں مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کے علاوہ پاکستانی کمیونٹی سے بھی خطاب کریں گے۔قبل ازیں برطانیہ روانگی سے قبل شہباز شریف نے کہا کہ حکومت پنجاب نے بیرونی دوروں کا تصور تبدیل کر دیا ہے۔گزشتہ تین برسوں کے دوران صوبائی حکام کی طرف سے کم سے کم دورے کئے گئے ہیں ان دوروں کا مقصد سیر و تفریح نہیں بلکہ یہ دورے نتیجہ خیز کوششوں کے ذریعے ملک میں سرمایہ کاری لانے کے لئے ہیں۔ برطانیہ میں قیام کے دوران برطانوی حکام سے عوامی فلاح و بہبود کے شعبوں میں تعاون اور ترقیاتی منصوبوں کے بارے بات کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد ائیر پورٹ پر اپنے وفد کے ہمراہ لندن روانگی کے موقع پربات چیت کے دوران کیا ۔ وفد میں رانا ثناءاللہ، مجتبی شجاع الرحمن، کامران مائیکل، ممبران قومی و صوبائی اسمبلی شامل ہیں۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر کہا کہ دورہ برطانیہ میں اپنے وقت کا ایک ایک لمحہ مختلف شعبوں میں تعاون حاصل کر نے کے عظیم مقصد کے لئے صرف کیا جائے گا تا کہ اس دورے کے مقاصد حاصل کیے جا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ وفد کے ارکان پاکستان کے سفیر ہیں اور پاکستانی تشخص کو اجاگر کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ دورہ برطانیہ کے دوران باہمی دلچسپی کے مختلف امور اور دو طرفہ تعاون کے لئے برطانوی قیادت اور حکام سے تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ قبل ازیں وزیر اعلی نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ اےم کیو ایم کی قیادت سے ملاقات ان کے دورہ برطانیہ کے شیڈول میں شامل نہیں ہے۔ اس بارے میں خبریں محض قیاس آرائیوں پر مبنی ہیں۔ ان کے دورے کا ایک مقصد برطانوی تعاون سے تعلیم کے شعبے کو جدید خطوط پر استوار کرنا اور بین الاقوامی معیار کے مطابق بنانا ہے تا کہ یہاں کے طلبا و طالبات بھی اس تعاون سے استفادہ کر کے جدید تعلیم سے بہرہ مند ہو سکیں۔
شہبازشریف