مقبوضہ کشمیر: یاسین ملک ساتھیوں سمیت گرفتار، مزاحمت پر کارکنوں پر تشدد، سینکڑوں زخمی

مقبوضہ کشمیر: یاسین ملک ساتھیوں سمیت گرفتار، مزاحمت پر کارکنوں پر تشدد، سینکڑوں زخمی

سرینگر (کے پی آئی) مقبوضہ کشمےر پولیس نے گزشتہ روز لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک اور انکے بارہ سے زائد ساتھیوں کو اس وقت حراست میں لے لیا جب وہ کولگام جارہے تھے۔ اس موقع پر جب فرنٹ کے کارکنوںکی جانب سے مزاحمت کی گئی تو ان پر تشدد کیا گیا۔ جس کے نتیجے میں کئی خواتین سمیت سینکڑوں لوگ زخمی ہوگئے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ یاری پورہ چوک پہنچنے کے بعد پولیس اور دوسری فورسز جس میں آرمی کی بھاری تعداد بھی شامل تھی نے ایک بار پھر جلوس کے شرکا ءپر دھاوا بول دیا اور محمدیاسین ملک اور دوسرے افراد کو گرفتار کرکے لے گئے جبکہ اس سے پہلے پولیس نے فرنٹ کے سینئر قائدین کو کیموہ کے مقام پر گرفتار کرلیا تھا۔ اس موقع پر فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے گرفتاریوں کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے بدترین ریاستی دہشت گردی سے تعبیرکیا ۔ انہوں نے کہا 7ستمبرکو نماز جمعہ کے بعدلال چوک میں ایک پرامن مظاہرہ کیا جائے گا۔اس مظاہرے کے ذریعے بھارت اور پاکستان کی قیادت کو باور کرایا جائے گاکہ کشمیر اور کشمیریوں کو پس پشت ڈال کر امن اور استحکام کے خواب دیکھنا فضول مشق ہے اور یہ کہ بھارت اور پاکستان کے حکمران ترجیحی بنیادوں پر اور کشمیریوں کی عملی شرکت کے ساتھ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کی جانب قدم اٹھائیں۔