مسلم لیگ (ن) مرکز میں شامل ہوسکتی ہے: سردار آصف احمد علی

لاہور (کامرس رپورٹر) وفاقی وزیر اور ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمشن سردار آصف احمد علی نے کہا ہے ملک میں سکیورٹی کا مسئلہ حل کئے بغیر سیاسی اور معاشی مسائل حل نہیں کرسکتے۔ طالبان اگر ہتھیار ڈال دیں تو ان سے بات ہوسکتی ہے ۔ میرے مطابق پنجاب میں پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ (ن) کے معاملات طے پاچکے ہیں، پنجاب میں اگر ان سے معاہدہ ہوتا ہے تو مرکز میں بھی ان سے معاہدہ ہوجائے گا۔ انہوں نے اس امر کا اظہار گزشتہ روز رائل پام کنٹری کلب میں بیکن ہائوس نیشنل یونیورسٹی کے انسٹیٹیوٹ آف پبلک پالیسی کی تقریب سے خطاب اور اخبار نویسوں سے گفتگو کے دوران کیا ہے۔ تقریب سے سابق وزیرخزانہ اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما سرتاج عزیز، ورلڈ بینک کے سابق نائب صدر شاہد جاوید برکی، ڈاکٹر حفیظ پاشا، ڈاکٹر اکمل حسین اور عائشہ غوث پاشا نے بھی خطاب کیا۔ سردار آصف احمد علی نے کہا بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا حجم دوگنا اور خواتین کو میڈیکل کارڈ جاری کئے جائیں گے، سابق وزیرخزانہ سرتاج عزیز نے کہا کہ مائیکرواکنامکس پر تو توجہ دی گئی لیکن افسوس کہ غربت میں کمی پر توجہ نہیں دی گئی۔ غریب افراد کی تعداد بڑھ کر 5 کروڑ ہوگئی ہے۔ شاہد جاوید برکی نے کہا کہ جب تک حکومت لوگوں کو تحفظ فراہم نہیں کرے گی سرمایہ کاری پیش آئے گی۔ڈاکٹر حفیظ پاشا نے کہا کہ آئندہ مالیاتی بجٹ میں صنعتی بحالی پر توجہ دی جائے۔ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا نے لوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلئے اقدام کئے جائیں۔