کراچی میں یکے بعد دیگر دو بم دھماکوں میں چوبیس افراد جاں بحق جبکہ پچاس سے زائد زخمی ہوگئے۔

خبریں ماخذ  |  کرائم رپورٹر
کراچی میں یکے بعد دیگر دو بم دھماکوں میں چوبیس  افراد جاں بحق جبکہ پچاس سے زائد زخمی ہوگئے۔

دھماکے کراچی کے علاقے ابوالحسن اصفہانی روڈاورعباس ٹاؤن میں ہوئے۔ دھماکوں کے بعد سکیورٹی اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ پولیس حکام کے مطابق ایک بم موٹر سائیکل پر نصب کیا گیا تھا جبکہ دوسرا دھماکا سلنڈر پھٹنے سے ہوا۔ دھماکوں سے دس سےزائد دکانیں اورمتعدد فلیٹس تباہ ہوئے۔ واقعہ کے بعد تمام سرکاری ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی اور زخمی افراد کو ہسپتال منتقل کردیا گیا۔ دھماکوں کے بعد علاقے میں بجلی کی فراہمی بھی منقطع رہی۔ دھماکوں میں چوبیس افراد جاں بحق جبکہ پچاس سے زائد زخمی ہوئے۔ زخمی ہونیوالے افراد میں بیشتر کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ صدرزرداری، وزیراعظم راجہ پرویزاشرف، الطاف حسین، مولانا فضل الرحمن اور وزیرداخلہ رحمن ملک نے دھماکوں کی مذمت کی ہے۔ گورنرسندھ ڈاکٹرعشرف العباد اور وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے دھماکوں کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ اداروں کو تحقیقات کا حکم دیدیا ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے جاں بحق افراد کے لواحقین کیلئے پندرہ، پندرہ لاکھ اور زخمیوں کیلئے دس، دس لاکھ روپے امداد کا اعلان بھی کیا گیا ہے۔ متحدہ قومی موومنٹ نے واقعہ کیخلاف تین روزہ سوگ جبکہ جعفریہ الائنس نے کل ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔