پاکستانی معیشت کو کمزور گورننس‘ بدعنوانی اور کم ریونیو وصولی کے مسائل درپیش ہیں : عالمی بینک

پاکستانی معیشت کو کمزور گورننس‘ بدعنوانی اور کم ریونیو وصولی کے مسائل درپیش ہیں : عالمی بینک

لاہور (این این آئی) پاکستان کی سماجی و معاشی صورتحال پر ورلڈ بنک کی جائزہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں سیاسی گورننس مستحکم ہوئی ہے اور عدلیہ کو آزادی ملی تاہم ملکی معیشت کی راہ میں کمزور گورننس، بدعنوانی، کم ریونیو وصولی، انتظامیہ کی نااہلی کے مسائل اب بھی موجود ہیں۔ جائزہ رپورٹ کے مطابق 2002ء میں پاکستان میں غربت کی 34 فیصد شرح دس سال بعد کم ہوکر 13.6فیصد ہوگئی ہے۔ پاکستان میں طبی شعبہ کا فی فرد سرکاری خرچ انتہائی کم ہے۔ سکول سے محروم بچوں کی شرح میں پاکستان دنیا کا دوسرا بڑا ملک ہے، ان میں دو تہائی لڑکیاں شامل ہیں۔ پاکستانی معیشت کی راہ میں حائل بڑی رکاوٹ توانائی کا بحران ہے، اگرچہ سڑکوں کی حالت خرابی کا شکار ہے تاہم گاڑیوں کی تعداد 10 فیصد سالانہ بڑھ رہی ہے۔ ورلڈ بنک کے مطابق بجٹ کے لئے قرض وصولی کی وجہ سے محفوظ مالی ذخائر میں اضافہ ہوا۔ رواں سال پاکستانی معیشت کی جی ڈی پی اپنے ہدف سے کم 3.6 فیصد سے 4 فیصد تک رہنے کی توقع ہے۔