نوازشریف، نثار میں اختلافات کی قیاس آرائیاں، سیاسی حلقوں کی گہری دلچسپی

نوازشریف، نثار میں اختلافات کی قیاس آرائیاں، سیاسی حلقوں کی گہری دلچسپی

اسلام آباد (محمد نواز رضا/ وقائع نگار خصوصی) وزیراعظم نوازشریف اور وزیر داخلہ چودھری نثار میں پچھلے ڈیڑھ ماہ سے کوئی ملاقات ہوئی ہے اور نہ ہی چودھری نثار نے اعلیٰ سطح کے کسی اجلاس میں شرکت کی ہے۔ وزیراعظم اور چودھری نثار کے درمیان ’’اختلافات‘‘ کے حوالے سے قیاس آرائیوں پر سیاسی حلقوں میں گہری دلچسپی لی جا رہی ہے۔ پچھلے پونے دو برس کے دوران ایشوز کے حوالے سے دوسری بار نواز شریف اور چودھری نثار کے درمیان اختلافات پیدا ہوئے ہیں۔ اختلافات کو ختم کرانے میں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اہم کردار ادا کررہے ہیں۔ شہباز شریف پچھلے ڈیڑھ ماہ کے دوران چودھری نثار سے متعدد ملاقاتیں کرچکے ہیں۔ کچھ ملاقاتیں 4 سے 5 گھنٹوں پر محیط تھیں۔ چودھری نثار نے دو روز قبل لاہور میں قیام کے دوران شہباز شریف سے طویل ملاقاتیں کی ہیں۔ ذرائع کے مطابق امریکہ سے واپسی کے بعد چودھری نثار نے وزیراعظم سے کوئی ملاقات کی اور نہ ہی امریکی حکام سے ملاقات کی کوئی رپورٹ بھجوائی۔ وزیر داخلہ وزارت کے معاملات میں ’’مداخلت‘‘ اور طے شدہ معاملات پر عملدرآمد میں تاخیری حربوں کی وجہ سے ناراض ہیں ان پر پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت کے خلاف 5 میگا سکینڈلز کی تحقیقات روکنے کے لئے شدیددبائو ہے جو انہوں نے قبول کرنے سے انکار کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق کچن کیبنٹ کے ٹھنڈیانی اور مری میں ہونے والے اجلاسوں میں گڈگورننس کے حوالے سے کئے گئے فیصلوں میں تاخیر بھی اختلافات کا باعث ہے۔ وزیراعظم کی میڈیا ٹیم کے بعض ارکان کی وزیر داخلہ کی سرکاری ٹیلی ویژن پر کوریج کو کم کرنے کے حوالے سے کی گئی ٹیلی فون کال بھی ناراضی کا باعث ہے۔