پینٹاگون کی جانب سے سی آئی اے کو مزید ڈرون طیارے فراہم کئے جانے کے بعد پاکستانی قبائلی علاقوں میں حملوں کی تعداد بڑھا دی گئی ہے ۔

پینٹاگون کی جانب سے سی آئی اے کو مزید ڈرون طیارے فراہم کئے جانے کے بعد پاکستانی قبائلی علاقوں میں حملوں کی تعداد بڑھا دی گئی ہے ۔

وال سٹریٹ جرنل کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی قبائلی علاقوں میں القاعدہ اورطالبان کے مبینہ ٹھکانوں کو نشانہ بنانے کیلئے امریکی فوجی حکام نے افغانستان میں موجود ڈرون طیارے بھی اپنی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کے حوالے کردیئے ہیں ۔ ڈرون طیاروں کی تعداد بڑھنے کے بعد سی آئی اے نے گزشتہ ماہ کے دوران ہر ہفتے اوسطاً پانچ حملے کیے جن میں درجنوں پاکستانی شہری جاں بحق ہو گئے ۔ اخبار کا کہنا ہے کہ پاکستان قبائلی علاقوں میں اتحادی افواج کی زمینی کارروائی کی سخت مخالفت کرتا ہے جبکہ خفیہ معاہدے کے تحت ڈرون حملوں پر خاموشی اختیار کی جاتی ہے ۔ ادھرامریکی فوجی حکام کا موقف ہے کہ افغانستان میں کامیابی کےلیے پاکستانی قبائلی علاقوں میں موجود ٹھکانوں کو نشانہ بنانا ضروری ہے ۔