وکلاء اور عدلیہ تصادم،ملتان کے 29 سول ججز مستعفی ہوگئے 

وکلاء اور عدلیہ تصادم،ملتان کے 29 سول ججز مستعفی ہوگئے 

مستعفی ہونے والوں میں سینئرسول جج چوہدری ظفراللہ ، جسٹس حیدرامین، جسٹس محمد ایاز ملک سمیت انیتس ججز شامل ہیں ۔ ججز نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ وہ قوم کی خدمت اور انصاف کی فراہمی کے جذبہ کے تحت جج بنے تھے۔ بار کے ممبران کے توہین آمیز رویے کے باوجود بھی انہوں نے کام جاری رکھا لیکن حالات روز بروز خراب ہوتے جارہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ فیصل آباد میں جج کے ساتھ بدتمیزی اور اب چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ خواجہ محمد شریف کے دفتر پر حملہ اس بات کا ثبوت ہیں کہ ججوں کی عزت وکلا کے ہاتھوں محفوظ نہیں ۔ ججز کا کہنا تھا کہ انہوں نے چیف جسٹس کے ساتھ اظہار یکجہتی اور وکلاء کے اقدام کی مذمت کرتے ہوئے اجتماعی استعفے پیش کیے ہیں ۔ ادھر شجاع آباد کے چار اور تحصیل جلال پور پیروالہ کے تین ججز بھی احتجاجاً اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے ہیں ۔