مردان میں نامعلوم افرادکی فائرنگ سے ممتاز مذہبی سکالر اور وائس چانسلر سوات یونیورسٹی ڈاکٹر فاروق خان اسسٹنٹ سمیت جاں بحق ہوگئے ہیں

مردان میں نامعلوم افرادکی فائرنگ سے ممتاز مذہبی سکالر اور وائس چانسلر سوات یونیورسٹی ڈاکٹر فاروق خان اسسٹنٹ سمیت جاں بحق ہوگئے ہیں

مردان میں صوابی روڈ پرڈیفنس کالونی میں ڈاکٹرفاروق خان اپنے کلینک میں موجود تھے کہ نامعلوم افراد نے ان پر حملہ کردیا ۔ اندھا دھند فائرنگ سے ڈاکٹر فاروق خان موقع پرجاں بحق ہوگئے جبکہ ان کا اسسٹنٹ محمد سلیم شدید زخمی ہوگیا جو بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔ ڈاکٹر فاروق خان کے قتل کی خبرفوری طور پر پورے ملاکنڈ ڈویژن میں پھیل گئی اور ہزاروں افراد ان کی رہائش گاہ کے باہر جمع ہوگئے۔  ڈاکٹر فاروق خان صوابی کے ایک گاؤں میں پیدا ہوئے تھے ،  وہ ایک معروف لکھاری ، کالم نگار ،  دانشور اور سوات یونیورسٹی میں  وائس چانسلر کے عہدے پر فائز تھے۔ ان کی تحریریں پاکستان اور اکیس ویں صدی، وٹ از اسلام اور سٹرگل فار اسلامک ریوولوشن نے خصوصی شہرت حاصل کی۔ انہوں نے پسماندگان میں بیوہ اور چار بچے چھوڑے ہیں۔