سپریم کورٹ آئین اور قانون کے مطابق کام کر رہی ہے‘ فیصلوں کی مکمل حمایت کرتے ہیں : صدر سپریم کورٹ بار

لاہور(وقائع نگار خصوصی) سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے نو منتخب صدر میاں اسرار الحق نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ آئین اور قانون کے مطابق کام کررہی ہے ‘ انتظامیہ اپنا کام صحیح کرے تو سپریم کورٹ کو از خودنوٹس لینے کی ضرورت ہی نہ پیش آئے۔ آئین و قانون کے تحت دئیے گئے فیصلوں پر عدلیہ کی حمایت اور جمہوریت کی مضبوطی اور استحکام کیلئے وکلاءکردار ادا کرتے رہیں گے۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے میاں اسرار الحق نے کہاکہ انتخابات میں وکلاءنے جس اعتماد کا اظہار کیا ہے اس پر پورا اترنے کی کوشش کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ آئین او رقانون کے مطابق کام کر رہی ہے جس سے عوام کو ریلیف مل رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کے فیصلے نہ ماننے کی روایت ختم ہوچکی ہے اور وکلاءمتحد ہیں۔ میاں اسرار نے کہا کہ اعلیٰ عدلیہ کی جانب سے آئین اور قانون کے تحت دئیے گئے فیصلوں پر وکلاءبرادری عدلیہ کی مکمل حمایت کرتی ہے او رملک میں جمہوریت کی مضبوطی اور استحکام کیلئے وکلاءاپنا کردار ادا کرتے رہیں گے۔ دریں اثناءایک انٹرویو میں میاں اسرار الحق نے کہا کہ عدلیہ کو اپنے معاملات قانون کے دائرے میں رہ کر چلانے چاہئیں۔ ہم عدلیہ کے ساتھ کسی قسم کی محاذ آرائی نہیں چاہیں گے۔ عدلیہ لوگوں کو انصاف دلوانے میں معاون ثابت ہوتی ہے مگر ججوں کی کمی کی وجہ سے لوگوں کو انصاف نہیں مل رہا۔ اگر ایگزیکٹو اپنے معاملات درست رکھےں تو ازخود نوٹس لینے کی نوبت نہ آئے۔ انہوں نے کہا کہ عدالتوں میں ججوں کی تعداد بڑھانی چاہئے اور مقدمات کی شنوائی ہونی چاہئے۔ ہماری کوشش ہو گی کہ عدلیہ کے حوالے سے تمام معاملات کو مذاکرات کے ذریعے حل کیا جائے، ہم سڑکوں پر جا کر نعرے لگانے کی پالیسی پر نہیں چلیں گے۔