اسلم رئیسانی کی پارٹی رکنیت معطل ۔۔۔ ایسا نہیں ہو سکتا‘ ہمت پر 10 روپے انعام دوں گا : وزیراعلی بلوچستان

 اسلم رئیسانی کی پارٹی رکنیت معطل ۔۔۔ ایسا نہیں ہو سکتا‘ ہمت پر 10 روپے انعام دوں گا : وزیراعلی بلوچستان

کوئٹہ + اسلام آباد (نوائے وقت نیوز+ وقائع نگار خصوصی + ایجنسیاں) وزیراعلی بلوچستان نواب اسلم رئیسانی نے کہا ہے کہ بلوچستان اسمبلی میں مجھے 65 میں سے 60 ارکان کا اعتماد حاصل ہے کوئی شخص میری پارٹی رکنیت معطل کرنے کی جرات نہیں کر سکتا۔ کوئی میری رکنیت معطل کرکے دکھائے میں اسے 10 روپے انعام دوں گا۔ وہ اپنی پارٹی رکنیت کی معطلی کے حوالے سے پی پی پی ضلع قلات کے صدر رفیق سجاد زہری کے اعلان پر تبصرہ کر رہے تھے۔ رفیق سجاد نے پارٹی پالیسیوں کو نقصان پہنچانے کے حوالے سے رئیسانی کی پارٹی رکنیت تین ماہ کے لئے معطل کر دی ہے۔ رفیق سجاد نے بتایا کہ نواب اسلم رئیسانی کو پارٹی پالیسیوں کے خلاف کام کرنے پر دو بار پہلے نوٹس بھی بھیجا گیا ہے اور پیپلز پارٹی بلوچستان کے صدر میر صادق عمرانی سے مشاورت کے بعد نواب اسلم رئیسانی کی پارٹی رکنیت تین ماہ کے لئے معطل کر کے ان سے جواب طلب کر لیا ہے۔ رفیق سجاد نے الزام عائد کیا کہ نواب اسلم رئیسانی کی غلط پالیسیوں سے صوبے میں پارٹی کو نقصان پہنچ رہا ہے وہ صوبے میں جاری بدامنی کی روک تھام پر توجہ نہیں دے رہے۔ ادھر بلوچستان اسمبلی میں پیپلز پارٹی کے ڈپٹی پارلیمانی لیڈر صوبائی وزیر علی مدد جتک نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی قلات کے صدر رفیق سجاد کی کوئی حیثیت نہیں کہ وہ وزیراعلیٰ اسلم رئیسانی کی رکنیت معطل کریں‘ رفیق سجاد کیخلاف پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی پر کارروائی کی جائے گی۔ اسلم رئیسانی کی بنیادی رکنیت 3 ماہ کیلئے معطل کئے جانے کے پر اپنے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے علی مدد جتک نے کہا کہ وزیراعلیٰ اسلم رئیسانی کو ارکان اسمبلی کا اعتماد حاصل ہے وہ پارٹی کا قیمتی سرمایہ ہیں۔ وزیر اعلیٰ بلوچستان کے خلاف غلط تاثر دینے پر رفیق سجاد کیخلاف کارروائی کی جائے گی۔ موجودہ صورتحال میں بلوچستان میں پیپلز پارٹی نئے بحران کا شکار ہو گئی ہے۔ پیپلزپارٹی بلوچستان کے صدر صادق عمرانی نے وزیراعلیٰ بلوچستان اسلم رئیسانی کی پارٹی رکنیت معطل کرنے کے قلات کے ضلعی صدر کے فیصلے کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ رئیسانی کی پارٹی رکنیت معطلی کی بنیادی وجہ کرپشن ہے، وزیراعلیٰ صوبے میں ڈاکٹروں کے اغواء کی وارداتوں میں ملوث ہیں، صوبائی حکومت عوام کے جان و مال کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہے۔ رفیق سجاد نے پارٹی کے صوبائی صدر کے فیصلے کی مکمل حمایت کرتے ہوئے کہا کہ اسلم رئیسانی کرپشن میں ملوث ہیں ان کی وجہ سے پارٹی کی صوبے میں بدنامی ہو رہی ہے۔ انہوں نے وزیراعلیٰ پر صوبے میں ڈاکٹروں کی اغواءکی وارداتوں میں ملوث ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ اسلم رئیسانی کی سربراہی میں صوبائی حکومت صوبے کے عوام کی جان و مال کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہے صادق عمرانی نے کہا کہ قلات میں دو سال کے دوران پیپلزپارٹی کے 18کارکن قتل ہو چکے ہیں ان ہلاکتوں میں بھی وزیراعلیٰ کسی نہ کسی طور پر ملوث ہیں۔ دریں اثناء پیپلزپارٹی کے صوبائی صدر نے کوئٹہ سے اغواءہونے والے آئی سرجن ڈاکٹر سعید خان کے اغواءکے خلاف جمعرات کو یہاں سے نکالی گئی ڈاکٹرز کی احتجاجی ریلی میں بھی شرکت کی اس موقع پر انہوں نے ڈاکٹرز سے اپنی مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے ڈاکٹر سعید خان کی جلد بازیابی کا مطالبہ کیا۔