صحت کیلئے 11 ارب مختص‘ ترقیاتی بجٹ 1500 ارب ہو گا‘ قومی اقتصادی کونسل نے منظوری دیدی

صحت کیلئے 11 ارب مختص‘ ترقیاتی بجٹ 1500 ارب ہو گا‘ قومی اقتصادی کونسل نے منظوری دیدی

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی + ایجنسیاں) وزیراعظم نواز شریف کی صدارت میں قومی اقتصادی کونسل نے وزارت خزانہ کی طرف سے آئندہ مالی سال کے وفاقی ترقیاتی منصوبے کا حجم 580 بلین روپے رکھنے کی تجویز مسترد کر دی ہے۔ پی ایس ڈی پی کے حجم میں 120 بلین روپے کا اضافہ کرکے 700 بلین روپے کردیا ہے۔ قومی اقتصادی کونسل نے مالی سال 2015-16 کے لئے معاشی اہداف کی بھی منظوری دے دی جس کے تحت یکم جولائی سے شروع ہونے والے مالی سال کے لئے جی ڈی پی گروتھ ریٹ ساڑھے 5 فیصد مقرر کر دیا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ سالانہ ترقیاتی منصوبے کے لئے مالی وسائل مختص کرنے اور سالانہ حجم پر پہلے وزارت خزانہ اور وزارت منصوبہ بندی کے درمیان اختلاف رائے تھا۔ این ای سی نے چھوٹے صوبوں کے اصرار کے بعد وفاقی سالانہ ترقیاتی منصوبے کو 580 بلین روپے سے بڑھا کر700 بلین کر دیا ہے جب کہ وفاقی اور صوبائی ترقیاتی منصوبوں کا حجم 1.514 ٹریلین کرنے کی بھی منظوری دے دی۔ وفاقی ترقیاتی منصوبہ 700 بلین روپے اور صوبوں کا مجموعی ترقیاتی پروگرام 814 بلین روپے ہو گا۔ این ای سی کے اجلاس میں سالانہ منصوبے کی منظوری دی گئی جس کے تحت زرعی گروتھ ریٹ 03.9 فیصد، مینو فیکچرنگ سیکٹر کا گروتھ 6.1 فیصد اوربرآمدات کا ہدف 25.5 بلین ڈالر مقرر کر دیا گیا اجلاس میں ملک کی معیشت کا تجزیہ پیش کیا گیا اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزراءاعلٰی ‘ گورنر کے پی کے ‘ سی ایم گلگت وبلتستان ‘ وزیر خزانہ ‘ وفاقی وزیر منصوبہ بندی ‘ پانی وبجلی کے وفاقی وزیر ‘ صوبوں کے وزراءخزانہ‘ اے جے کے کے وزیر خزانہ‘ اور دوسرے اعلٰی حکام نے بھی شرکت کی‘ این ای سی کے اجلاس سے قبل صوبوں کے وزراءاعلٰی نے وزیراعظم سے ملاقات بھی کی‘ اجلاس میں سی ڈی ڈبلیو پی کی اپریل 2014 سے مارچ 2015 ءکی رپورٹ بھی پیش کی گئی‘ منصوبہ بندی کمشن کو 5 سالہ منصوبے کی اشاعت کرنے کی بھی منظوری دی گئی۔وزیراعظم نے ہدایت کی کہ وفاقی حکومت کی ترقیاتی فنڈز کو ترجیحی منصوبوں میں صرف کیا جائے اور صوبائی حکومتوں سے بھی رابطہ رکھا جائے‘ صنعت کے لئے گروتھ 6.4 فیصد‘ سروسز5.7 فیصد مقرر کیا گیا ہے اہم فیصلوں کا گروتھ ریٹ 3.2 فیصد‘ لائیو سٹاک 4.1 فیصد‘ جنگلات کی گروتھ ریٹ 4 فیصد مقرر کیا گیا ہے ایل ایس ایم 6 فیصد ‘ سمال اینڈ ہا¶س ہولڈ مینوفیکچرنگ کا گروتھ ریٹ8.2 فیصد مقرر کیا گیا افراط زر 6 فیصد دینے کی توقع ہے۔وزیراعظم نوازشریف نے قومی اقتصادی کونسل کے اجلاس کے بعد مالی بجٹ 16-2015ءکے سالانہ ترقیاتی بجٹ کی منظوری دے دی۔ قومی اقتصادی کونسل کے اجلاس میں صوبوں کے مطالبے پر صحت کےلئے 11 ارب 10 کروڑ روپے مختص کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور بہبود آبادی کےلئے 5 ارب 20 کروڑ روپے رکھنے پر اتفاق کیا گیا۔ اسی طرح واٹر کورسز کے لئے رواں مالی سال 2 ارب روپے جاری کرنے پر بھی اتفاق ہوا۔کراچی میں پانی کے منصوبے کے فور کے لئے 2 اور آئندہ مالی سال 50 کروڑ روپے مختص کرنے کا فیصلہ کیا گیا تو وزیراعلی سندھ قائم علی شاہ نے کراچی کے پانی کے منصوبے کے لئے مزید فنڈز کا مطالبہ کیا جس پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شاہ جی آپ فکر نہ کریں ضرورت پڑی تو مزید پیسے بھی جاری کئے جائیں گے۔ نوائے وقت رپورٹ کے مطابق اجلاس میں آئندہ مالی سال کے اہداف پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں مالی سال 2015-16ءکے بجٹ اہداف کی منظوری دی گئی۔ مجموعی طور پر 15سو ارب روپے ترقیاتی بجٹ کی منظوری دی گئی۔
قومی اقتصادی کونسل