دفعہ370 ختم کرنے کی سازش، یاسین ملک کا ’’کشمیر چھوڑ دو‘‘ تحریک شروع کرنے کا اعلان

دفعہ370  ختم کرنے کی سازش، یاسین ملک کا ’’کشمیر چھوڑ دو‘‘ تحریک شروع کرنے کا اعلان

سرینگر (کے پی آئی)’’کشمیر چھوڑ دو تحریک‘‘ شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ دفعہ 370کے خاتمے کے غبارے کو اڑانے کا مقصد کشمیر میں مزاحمتی تحریک کے بیانیہ کو تبدیل کرنے کی ایک سازش ہے۔  سرینگر کے مقامی ہوٹل میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے محمد یاسین ملک نے کہاکہ بھارت میں برسراقتدارآنے والی بھاجپا حکومت کااصلی چہرہ سامنے آرہا ہے جس کا مقصد مسئلہ کشمیرکی اہمیت کو ختم کرکے جموں و کشمیر اور بھارت  کے درمیان رشتوں تک محدود کرنا ہے۔ انہوںنے کہاکہ دفعہ370کے خاتمہ کی جو ہوا چلی ہے اوراس پر ریاست کی مین سٹریم جماعتوں کا واویلا کرنا لوگوں کو گمراہ کرنے کے سوا کچھ نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ مزاحمتی تحریک کو ختم کرنے کیلئے نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کو کام سونپا گیا ہے اورپریس کانفرنس اور بیانات دینے سے عوام کو بیوقوف نہیں بنایاجاسکتا۔انہوں  نے کہاکہ بھارت کی حکومت اور پارلیمنٹ بھی دفعہ 370کو ختم نہیں کرسکتی جبکہ یہ اختیار صرف ریاستی اسمبلی کے پاس ہے اورنیشنل کانفرنس و پی ڈی پی کی اس معاملہ پر ڈرامہ بازی کرنا عوام کو بیوقوف بناکر اقتدار کے مزے لوٹنا ہے۔ یاسین ملک نے کہاکہ دفعہ370کے خاتمہ کا شوشہ چھوڑنے سے بھارت اور کشمیر میں بحث و مباحثوں کا ایک طوفان شروع ہوا ہے اوراس پر ذرائع ابلاغ میں قلمکاروں اور کالم نویسوں کے مضامین شائع ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ریاست میں برسراقتدارآنے والے حکمرانوں شیخ محمد عبداللہ، بخشی غلام محمد، خواجہ غلامحمد صادق، ڈاکٹر فاروق عبداللہ، مفتی محمد سعیداور عمرعبداللہ  نے بھارت کے احکامات کے آگے سر خم تسلیم کرتے ہوئے دفعہ 370کی بیخ کنی کی  اور اب یہ دفعہ کاغذات تک ہی محدود رہ گئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ ریاستی و مرکزی سطح پر دفعہ 370 کے خاتمہ پر جو مباحثہ شروع ہوا اس کا مقابلہ کرنے کیلئے گراس روٹ لیول پر ’کشمیر چھوڑ دو تحریک‘ شروع کی جائے گی اور لوگوں سے اپیل کی جاتی ہے کہ وہ کسی بھی فریب میں نہ آئیں۔ انہوں نے کہاکہ کشمیر کی نئی نسل بھارت کے تئیں اور مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے فرسودہ مذاکرات سے بہت مایوس ہوچکی  ہے کیا  بھارتی حکومت یہاں کے نوجوانوں کو یہ پیغام دینا چاہتی ہے کہ مسئلہ کشمیر بندوق سے حل ہوگا۔