ورکنگ بائونڈری: بھارت کی بلااشتعال گولہ باری‘ فائرنگ جاری‘ پاکستان نے سیکٹر کمانڈرز کی سطح پر مذاکرات بند کر دیئے: امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے: خواجہ آصف

ورکنگ بائونڈری: بھارت کی بلااشتعال گولہ باری‘ فائرنگ جاری‘ پاکستان نے سیکٹر کمانڈرز کی سطح پر مذاکرات بند کر دیئے: امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے: خواجہ آصف

لاہور (نیٹ نیوز+ نوائے وقت رپورٹ) پنجاب رینجرز نے بھارت سے سیکٹر کمانڈرز کی سطح پر کسی قسم کی بات چیت یا فلیگ میٹنگ  بند کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ڈائریکٹر جنرل رینجرز پنجاب میجر جنرل خان طاہر جاوید خان نے کہا کہ بھارت سے اب نچلی سطح پرنہیں صرف ڈی جی ایم او اور ڈی جی کی سطح پر ہی مذاکرات ہو سکتے ہیں۔ جب رینجرز کے جوان بھارتی فائرنگ سے زخمی ہونیوالے اپنے ساتھیوں کو اٹھانے کیلئے نکلے تو بھارتی فوج نے پھر گولیاں چلا دیں، فائرنگ رکوانے کے لئے بھارتی پلاٹون کمانڈر سے لے کر ڈی جی ایم او تک رابطہ کیا گیا لیکن فائرنگ بند نہیں ہوئی۔ سینئر صحافیوں، کالم نگاروں سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی جی رینجرز پنجاب خان طاہر جاوید خان نے بتایا کہ ستمبر سے بھارت کے ساتھ مذاکرات کی کوشش کر رہے ہیں لیکن کوئی جواب نہیں ملا۔ بھارت نے 2014 ء میں ورکنگ بائونڈری پر 48 ہزار 6 سو 68 لائٹ مشین گن رائونڈ جبکہ 37 ہزار 285 مارٹر گولے چلائے جس سے بارڈر پر 11 پاکستانی شہید ہوئے۔ رینجرز کے جوان فلیگ میٹنگ میں شرکت کے لئے جارہے تھے جن پر بھارتی فوج نے فائرنگ کر دی۔ پنجاب رینجرز کے جوان اپنے زخمی ساتھیوںکو اٹھانے کے لئے نکلے تو بھارتی فوج نے پھر گولیاں چلا دیں۔ بھارتی فوج کی مسلسل فائرنگ کے نتیجے میں شہید ہونے والے جوانوں کی نعشیں رسیوں سے باندھ کر لانا پڑیں۔ بھارت کو بتا دیا ہے کہ آئندہ نچلی سطح پر کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے۔ بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیا ہے۔ میجر جنرل طاہر جاوید خان نے کہا ہے کہ بھارت نے بلااشتعال فائرنگ کی ابتدا کی، جوابی فائرنگ میں ایک بھارتی اہلکار ہلاک ایک زخمی ہوا۔ ڈی جی رینجرز پنجاب نے کہا جوانوں کی شہادت کے بعد پنجاب رینجرز نے فائرنگ کا جواب دیا۔ آئی این پی کے مطابق ڈی  جی پنجاب رینجرز  میجر جنرل خان طاہر جاوید نے رینجرز کے دو جوانوں کی شہادت کے بعد بھارت سے سیکٹر کمانڈر کی سطح پر بات چیت بند کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ بلااشتعال فائرنگ کی  ابتدا بھارت نے کی۔ جوانوں کی شہادت کے بعد رینجرز نے فائرنگ کا جواب دیا۔ بھارت نے ہمیشہ  ورکنگ بائونڈری پر سیزفائر کی خلاف ورزی کی جسے روکنے کیلئے ہر سطح پر اس سے رابطہ کیا لیکن بھارت ہٹ دھرمی سے باز نہیں آیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق پنجاب رینجرز نے آئندہ اہلکاروں کی سطح پر پاکستان بھارت سرحد پر فلیگ میٹنگ نہ کرنے کا اعلان کیا ہے اور آئندہ مذاکرات صرف اعلیٰ سطح پر ہونگے۔ بھارت نے ورکنگ بائونڈری پر خلاف ورزی کے بعد فلیگ میٹنگ کو بھی خون میں نہلا دیا۔ بھارت نے سرحد پر عالمی قوانین کی خلاف ورزی کی تو سخت جواب دینگے۔ دوسری جانب بھارتی فوج کی ورکنگ بائونڈری پر شکر گڑھ  سیکٹرمیں رات بھر بلااشتعال  فائرنگ و گولہ باری جاری رہی تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ پنجاب رینجرز  نے بھرپور جوابی کارروائی سے بھارتی گولہ باری  کا منہ توڑ جواب دیا ۔ پنجاب رینجرز  کے ترجمان  کے مطابق بھارتی فورسز نے  بدھ اور جمعرات  کی درمیانی شب سے صبح  تک ورکنگ بائونڈری  شکرگڑھ میں بھاری ہتھیاروں سے بلااشتعال  فائرنگ کی۔ پنجاب رینجرز  نے بھارتی بلااشتعال  فائرنگ  اور گولہ باری کا منہ توڑ جواب دیا جس کے بعد بھارتی گنیں خاموش  ہو گئیں۔ دریں اثنا شکرگڑھ سیکٹر میں بھارتی بارڈر سکیورٹی فورسز کی فائرنگ سے شہید ہونے والے رینجرز کے نائیک ریاض احمد، لانس نائیک ملک صفدر کو انکے آبائی علاقوں جہلم اور خوشاب میں پورے اعزاز کے ساتھ سپردخاک کر دیا گیا۔ نماز جنازہ میں رینجرز حکام اور اہم شخصیات سمیت سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔ رینجر کے لانس نائیک صفدر محمود کو آج انکے آبائی گائوں سودھی بالا وادی سون میں ہزاروں سوگواروں کی موجودگی میں سپردِ خاک کیا گیا۔ نماز جنازہ میں علاقہ کے معززین کی کثیر تعداد کے علاوہ ڈی ایس پی رینجر سکندر اور دیگر اہلکاروںنے شرکت کی، رینجرز کے چاک و چوبند دستے نے سلامی دی، پھولوں کی چادر چڑھائی۔ شہید نے پسماندگان میں تین بیٹے، دو بیٹیاں چھوڑی ہیں۔ شہید ہونے والے صفدر محمود کی والدہ نے صحافیوںسے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملکی سرحدوں کی حفاظت کرتے ہوئے میرے بیٹے نے شہادت پائی ہے، مجھے اس پر فخر ہے اگر میرے پانچ بیٹے بھی ہوتے تو ملک کی حفاظت کی خاطر قربان کر دیتی۔ شہید صفدر محمود کے بیٹوں علی رضا اور رفاقت حسین نے کہا کہ انہیں فخر ہے انکے والد نے شہادت حاصل کی ہے، وہ شہید کے بیٹے ہیں۔ اسسٹنٹ کمشنر پنڈ دادنخان محمد اشرف گجر نے شکر گڑھ سیکٹر میں بھارتی فورسز کی فائرنگ سے شہید ہونیوالے جہلم کے رہائشی رینجرز کے جوان نائیک محمد ریاض شاکر کی نماز جنازہ میں شرکت کی جو انکے آبائی گائوں جلال پور شریف میں ادا کی گئی۔ اسسٹنٹ کمشنر محمد اشرف گجر نے ڈی سی او جہلم کی طرف سے نائیک محمد ریاض کی قبر پر پھولوں کی چادر بھی چڑھائی۔ اس موقع پر رینجرز کے افسروں اور جوانوں کے علاوہ مقامی شہریوں کی کثیر تعداد موجود تھی۔ نائیک محمد ریاض شاکر کو پورے فوجی اعزاز کے ساتھ دفن کیا گیا۔
اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے  ورکنگ بائونڈری  پر فلیگ میٹنگ پر کئے گئے بھارتی حملہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے ہماری  طرف سے دیرپا امن کے قیام  کی کوششوں میں مشکلات نہ کھڑی کی جائیں۔ ہماری امن کی خواہش کو بھارت ہماری کمزوری نہ سمجھے۔ ہم بھارت کو ہر قسم کی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ وزارت دفاع کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ  پانچ   سے چھ  ماہ کے دوران ورکنگ بائونڈری پر ہونے والے حملے خطے میں امن کی کوشش کو ضائع کر سکتے ہیں۔ دنیا بھر میں فلیگ میٹنگ پر حملہ بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی سمجھا جاتا ہے، بھارت بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔ دوسری جانب بھارت نے کہا ہے کہ کنٹرول لائن پر سیزفائر کی خلاف ورزیوں کے باوجود پاکستان اور بھارت کے درمیان مسائل کو جلد حل کر لیا جائے گا۔ وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے ایک بیان میں امید ظاہر کی کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان مسائل کو جلد حل کر لیا جائیگا۔ دونوں ممالک کے درمیان  سفارتی رابطے جاری ہیں۔ راجناتھ سنگھ نے  کہا کہ میرے خیال میں پاکستان آج نہیں تو کل صحیح راستے پر آجائے گا۔ بھارت کے سابق ڈپٹی چیف آف آرمی سٹاف لیفٹیننٹ جنرل (ر) راج کادیان نے کہا کہ سامبا سیکٹر پر سیز فائر کی خلاف ورزی کا واقعہ ایک بدقسمتی ہے، پاکستان کو چاہئے کہ وہ پشاور واقعے کے بعد اپنے اندرونی مسائل پر توجہ مرکوز کرے۔ بھارتی نیوز ایجنسی سے گفتگو کے دوران سامبا سیکٹر میں فائرنگ کے واقعے پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے  کادیان نے الزام عائد کیا کہ امیر جماعۃ الدعوۃ حافظ سعید اور ممبئی حملوں کے ماسٹر مائنڈ ذکی الرحمان لکھوی پاکستان کے خفیہ ادارے اور پاکستانی حکمرانوں کے کٹھ پتلی  ہیں اور ان کے کہنے پر سب کچھ کرتے ہیں۔