فوجی عدالتوں پر تحفظات ابھی دور نہیں ہوئے : زرداری

فوجی عدالتوں پر تحفظات ابھی دور نہیں ہوئے : زرداری

کراچی+ لاہور (سٹاف رپورٹر+نوائے وقت رپورٹ+خبرنگار) پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ فوجی عدالتوں کے طریقہ کار اور ان کا غلط استعمال روکنے کیلئے پارلیمانی جماعتوں کی مشاورت سے واضح پالیسی کا اعلان کیا جائے۔ پیپلز پارٹی شہیدوں کی جماعت ہے جو پیپلز پارٹی سے غداری کریگا، عوام اسکا خود احتساب کرینگے۔ کسی کے آنے اور جانے سے پیپلز پارٹی پر کوئی فرق نہیں پڑتا ہے۔ ہم بھٹو کے سپاہی ہیں اور بھٹو کا مشن آگے لے کر چل رہے ہیں۔ جلد خیبر پی کے  کا تفصیلی دورہ کروں گا۔ وہ بلاول ہائوس کراچی میں خیبر پی کے کے پارٹی رہنمائوں کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔ اجلاس میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی، فریال تالپور، شیری رحمان، رحمان ملک، فیصل کریم کنڈی، خانزادہ خان اور دیگر رہنمائوں نے شرکت کی۔ خیبرپی کے کے صدر خانزادہ خان نے صوبے میں پارٹی کے تنظیمی امور سے آگاہ کیا۔ آصف علی زرداری نے کہا کہ ہم نواز شریف یا ان کی حکومت کی حمایت نہیں کررہے بلکہ جمہوریت کا ساتھ دے رہے ہیں۔ پیپلز پارٹی نے جمہوریت کے لئے بڑی قربانیاں دی ہیں۔ اب جمہوریت کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے۔ سانحہ پشاور ایک بہت بڑا واقعہ ہے۔ دہشت گردی کے خلاف سیاسی قیادت اور قوم کو متحد ہونے کی ضرورت ہے۔ فوجی عدالتیں دہشت گردوں کے خلاف استعمال ہونی چاہئیں۔ان کے قیام کا طریقہ کار واضح ہونا چاہئے۔ ان عدالتوں کا غلط استعمال روکنے کے لئے مربوط پالیسی تشکیل دی جانی چاہئے۔ نجی ٹی وی کے مطابق انہوں نے کہا کہ فوجی عدالتوں پر کچھ تحفظات ہیں۔ پیپلزپارٹی کے قانونی ماہرین فوجی عدالتوں کے معاملے پر سر جوڑ کر بیٹھے ہیں‘ فوجی عدالتوں میں صرف دہشت گردی کے مقدمات چلنے چاہئیں۔ فوجی عدالتوں کے قیام کے حوالے سے تحفظات دور نہیں ہوئے‘ ہم مسودے کا جائزہ لیکر حمایت کریں گے۔ آئینی دائرے میں رہتے ہوئے کوئی مسودہ قبول ہو گا۔ مخدوم امین فہیم کی پارٹی سے کوئی ناراضگی نہیں۔ خیبر پی کے اور فاٹا کے ارکان ناراضگیاں دور کرکے مل کر چلیں۔ پی پی پی نے صرف دہشت گردی کے خاتمے کیلئے فوجی عدالتوں کے قیام کی حمایت کی۔ تمام سیاسی جماعتیں متحد ہو کر دہشت گردی کا مقابلہ کریں۔ حکومت نہیں جمہوریت بچا رہے ہیں اسی وجہ سے فوجی عدالتوں کی حمایت کی۔ دہشت گردوں کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے۔ اجلاس میں پیپلزپارٹی خیبر پی کے عہدیدار بھی شریک تھے۔ نور عالم خیبر پی کے اور اخونزادہ چٹان فاٹا کیلئے سابق صدر کے ایڈوائزر مقرر کئے گئے ہیں۔ خانزادہ خان نے کہا کہ پارٹی رہنماؤں میں اختلاف نہیں۔ آصف زرداری نے ناراضگی اور اختلافات ختم کرا دئیے ہیں۔ زرداری 8 جنوری کو لاہور آ رہے ہیں۔ وہ لاہور میں 5 روز قیام کریں گے۔ وہ سابق چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ ذکا اشرف کے صاحبزادے کی شادی کی تقریب میں شرکت کریں گے۔