امید ہے دہشت گردی کیخلاف سیاسی اتفاق رائے چھوٹے ایشوز پر ضائع نہیں ہو گا: کور کمانڈر کانفرنس

امید ہے دہشت گردی کیخلاف سیاسی اتفاق رائے چھوٹے ایشوز پر ضائع نہیں ہو گا: کور کمانڈر کانفرنس

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر + بی بی سی) فوجی قیادت نے کہا ہے کہ انسداد دہشت گردی کیلئے درکار وسیع تر سیاسی اتفا ق رائے حاصل کرلیا گیا جوکہ امید ہے کہ چھوٹے ایشوز کی نذر نہیں ہوگا۔ جی ایچ کیو میں کور کمانڈروں کی 178 ویں کانفرنس کے اختتام پر آئی ایس پی آر کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ کانفرنس کی صدارت آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے کی۔ شرکاء نے سانحہ پشاور پر دلی رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ ملک سے دہشت گردی کی لعنت کو جڑ سے اکھاڑنے تک آپریشن نہیں رکے گا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق شرکاء نے ملک کی داخلی اور بیرونی سلامتی اور بطور خاص آپریشن کے حوالہ سے صورتحال پر تفصیل کے ساتھ غور کیا۔ ملک کے طول و عرض میںجاری انٹیلی جنس کی بنیاد پر ہونے والے آپریشن اور اس کے نتائج بھی زیر غور آئے۔ آرمی چیف نے خطاب کرتے ہوئے انسداد دہشت گردی کیلئے کل جماعتی کانفرنس میں ملک کی سیاسی قیادت کے عزم کو سراہتے ہوئے کہا کہ پوری قوم دہشت گردوں اور انکے ہمدردوں کی بیخ کنی کے حوالے سے دلیرانہ فیصلوں کیلئے سیاسی اور فوجی قیادت کی طرف دیکھ رہی ہے۔ شرکاء نے کہا کہ انسداد دہشت گردی کیلئے جو وسیع تر سیاسی اتفاق رائے درکار تھا وہ حاصل کرلیا گیا ہے۔ امید ہے کہ یہ اتفاق رائے چھوٹے ایشوز پر ضائع نہیں ہوگا۔ شرکاء نے زور دیا کہ کامیابی کی کلید یہ ہے کہ تمام ادارے مزید وقت ضائع کئے بغیر مل کر انسداد دہشت گردی کے قومی ایکشن پلان پر فوری اور مؤثر عمل کریں۔ آرمی چیف نے تمام شعبوں کو اس ایکشن پلان پر عمل کیلئے تفویض کئے گئے کاموں کا جائزہ لیا اور ہدایت کی کہ عمل درآمد کیلئے مقرر مدت کی سختی سے پاسداری کی جائے۔ این این آئی کے مطابق اس عزم کا اعادہ کیا گیا کہ سرزمین سے آخری دہشت گرد کے خاتمے تک آپریشنز بند نہیں کئے جائینگے۔ جامع قومی ایکشن پلان پر مزید وقت ضائع کئے بغیر فوری اور موثر عملدر آمد کی کنجی تمام اداروں کے اتحاد میں مضمر ہے، امید ہے دہشتگردی کیخلاف حاصل شدہ انتہائی ضروری اور قیمتی وسیع تر سیاسی اتفاق رائے معمولی مسائل میں ضائع نہیں کیا جائیگا۔ جنرل راحیل شریف نے قومی ایکشن پلان کے تحت سونپے گئے ٹاسک کے حوالے سے تمام متعلقین کی جانب سے کئے گئے ہوم ورک کا جائزہ لیا اور ہدایت کی کہ اس حوالے سے مقرر کی گئی ٹائم لائن پر سختی سے عملدرآمد کیا جائے۔ بی بی سی کے مطابق کانفرنس کے شرکاء نے اس امید کا اظہار کیا کہ ملک کی سیاسی قیادت وسیع پیمانے پر ہونے والے سیاسی اتفاق رائے کو چھوٹے معاملات کی وجہ سے ضائع نہیں کرے گی۔ اجلاس میں آرمی چیف نے فوج کی جانب سے قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کے لئے ہونے والی پیش رفت پر بات کی۔ آرمی چیف نے اپنے خطاب میں ملک کی سیاسی قیادت کی جانب سے کل جماعتی کانفرنس میں کئے جانے والے عزم کی تعریف کی۔