لاپتہ افراد کیس: سپریم کورٹ کا حکم نظرانداز‘ 19 ایف سی افسر پیش نہ ہوئے

لاپتہ افراد کیس: سپریم کورٹ کا حکم نظرانداز‘ 19 ایف سی افسر پیش نہ ہوئے

کراچی (نوائے وقت نیوز + آن لائن) لاپتہ افراد کیس میں سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود ایف سی کے 19 افسر ڈی آئی جی سی آئی ڈی کے سامنے پیش نہیں ہوئے۔ سپریم کورٹ نے دو روز پہلے سماعت کے دوران بلوچستان سے لاپتہ افراد کے مقدمات میں ملوث ایف سی کے 19 افسروں کو اتوار کو ڈی آئی جی سی آئی ڈی کوئٹہ کے سامنے پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔ عدالت کو ایف سی کے لاء آفیسر میجر ندیم کی طرف سے بتایا گیا تھا جن افسروں کے خلاف الزامات ہیں وہ اب آرمی کے آفیسرز ہیں۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا تھا  عدالت کو پتہ ہے۔ یہ فوج کے ہیں تو ہیڈ کوارٹر کو کہیں  انہیں پیش کریں۔ عدالت کے واضح حکم کے باوجود یہ افسر ڈی آئی جی سی آئی ڈی کے سامنے پیش نہیں ہوئے۔ آن لائن  کے مطابق بلوچستان سے 35 لاپتہ افراد کے کیس میں حکومت نے سپریم کورٹ سے مزید مہلت لینے کا فیصلہ کرلیا ہے اور اس حوالے سے توقع ہے آج  باقاعدہ درخواست دائر کی جائیگی۔ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں جسٹس جواد ایس خواجہ اور جسٹس امیر ہانی مسلم پر مشتمل بینچ اس کیس کی سماعت شروع کریگا اور چیف جسٹس پہلے ہی کراچی میں سماعت کے دوران حکم دے چکے ہیں،  اس کیس کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کی جائیگی۔ عدالت کی طرف سے ان افراد کو فوری طور پر بازیاب کرکے پیش کرنے کا حکم دیا گیا ہے  لیکن ذرائع کے مطابق اب تک اس میں کوئی پیشرفت نہیں ہوسکی۔