اسلام آباد ہائیکورٹ نے پرویزاشرف کے داماد کی پاک چائنہ انوسمنٹ کمپنی میں تقرری کالعدم قرار دیدی

اسلام آباد ہائیکورٹ نے پرویزاشرف کے داماد کی پاک چائنہ انوسمنٹ کمپنی میں تقرری کالعدم قرار دیدی

اسلام آباد (آئی این پی + آن لائن) اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے داماد شاہ نواز محمود کی پاک چائنہ انویسٹمنٹ کمپنی لمیٹڈ (پی سی آئی سی ایل) میں ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر تعیناتی کو غیر قانونی قرار دے دیا۔ پیر کو عدالت عالیہ کے چیف جسٹس محمد انور خان کانسی پر مشتمل سنگل بنچ نے جاوید محمود کی جانب سے دائر درخواست پر اپنا 14مارچ کو محفوظ کیا گیا فیصلہ سنایا۔ حکومت پاکستان نے سابق وزیر اعظم کے داماد کو آٹھ مارچ 2012 ءکو کمپنی کا ڈپٹی ایم ڈی تعینات کیا تھا۔ درخواست گزار جاوید محمود کو تین جنوری 2011 ءکو اسی عہدہ پر تعینات کیا گیا تھا اور انکی ملازمت دو جنوری 2014ءتک تھی تاہم اس سے قبل ہی انہیں غیر قانونی طور عہدے سے ہٹا کر سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کے داماد کو تعینات کیا تھا جس کے خلاف جاوید محمود نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں رٹ دائر کر رکھی تھی۔ آن لائن کے مطابق سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے داماد شاہ نواز کی پاک چائنہ انوسٹمنٹ کمپنی میں بطور ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر کی تقرری کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا گیا جس میں یہ موقف اختیار کیا تھا ان کی تقرری میرٹ سے ہٹ کر اور اقربا پروری کی بنیاد پر کی گئی لہذا ان کی تقرری کو کالعدم قرار دیا جائے۔ ادھر بورڈ آف ڈائریکٹر نے بھی ان کی تقرری کی تصدیق نہیں کی۔