نئے بلدیاتی نظام کے خلاف سندھ کے کئی شہروں میں ہڑتال ریلی پر فائرنگ‘18 زخمی ‘ متعدد گاڑیاں نذر آتش

نئے بلدیاتی نظام کے خلاف سندھ کے کئی شہروں میں ہڑتال ریلی پر فائرنگ‘18 زخمی ‘ متعدد گاڑیاں نذر آتش

کراچی / حیدر آباد/ سانگھڑ ( نوائے وقت نےوز+ این این آئی) سندھ کی قومیت پرست جماعتوں کی جانب سے نئے بلدیاتی قانون کے خلاف احتجاج، شٹرڈاﺅن ہڑتال اور یوم سیاہ کی کال پر کراچی کے مضافاتی علاقوں سمیت سندھ کے بیشتر علاقوں میں پہیہ جام رہا، کراچی میں 3بسیں حیدر آباد میں ٹرالر نذر آتش کر دیا گیا۔کراچی سمیت سندھ بھی سندھ بھر میں قوم پرست جماعتوں کی کال پر شٹر ڈاﺅن اور پہیہ جام ہڑتال کی گئی۔ ہڑتال کے باعث شہر کراچی کے مضافاتی علاقوں میں بھی معمولات زندگی متاثر ہوئے ، ملیر ، سٹیل ٹاﺅن، گلشن حدید ، صفورا چوک ، سچل اور خمیسو گوٹھ کے علاقوں میں دکانیں اور بازار بند جبکہ ٹرانسپورٹ نہ ہونے کے برابر تھی، کراچی میں بھی نیشنل ہائی وے، سٹیل ٹاون اور سپر ہائی وے پر قومیت پرست جماعتوں کے کارکنوں نے پیٹرول پمپس اور کاروباری مراکز بند کرا دیئے۔ شیر شاہ میں مشتعل مظاہرین نے گاڑیوں پر پتھراﺅکر کے سڑک بلاک کردی ، پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر مظاہرین کو منتشر کرکے ٹریفک کو بحال کرادیا۔ ان واقعات کے بعد متاثرہ علاقوں میں کشیدگی پائی گئی جس کے بعد پولیس اور رینجرز کی اضافی نفری کو تعینات کردیا گیا۔ ایس ایس پی گلشن اقبال عاصم قائم خانی کے مطابق ہنگامہ آرائی اور جلاﺅگھیراﺅ کرنے والے ملزموں کو گرفتار کرلیا گیا ہے جو امن وامان کی صورتحال کو خراب کرنے میں مصروف تھے۔ حیدرآباد میں میں صورتحال دیگر شہروں کی نسبت کشیدہ رہی جہاں فائرنگ کے مختلف واقعات پیش آئے جبکہ بائی پاس پر نامعلوم افراد نے ٹرالر کو آگ لگا دی۔ سانگھڑ کے علاقے شاہ پور چاکر میں فنکشنل لیگ کے احتجاجی ریلی پر مورچہ بند افراد کی فائرنگ سے پیرصاحب پگاراکے خلیفہ غلام محمد کے بیٹے سمیت18افراد زخمی ہوگئے جنہیں مختلف ہسپتالوں میں داخل کرادیا گیا۔ جس کے بعد رےلی کے شرکا مشتعل ہو گئے اور شہر میں سخت کشیدگی پیدا ہو گئی۔ این این آئی کے مطابق قمبر، کنری، میہڑ، کندھکوٹ ، عمرکوٹ، ٹنڈو محمد خان، خیرپورمیرس، کنڈیارو، تھرپارکر، چھاچھرو، مورو، نوشہرو فیروز، ڈگری، گھوٹکی ،خیرپور، پنوعاقل سمیت سندھ بھر میں شٹر ڈاﺅن پہیہ جام ہڑتال کی گئی۔ جامشورو میں کوٹری، مانجند سمیت دیگر علاقوں میں بھی شٹر ڈاﺅن ہے۔ خیرپور میں بلدیاتی نظام کے خلاف ہڑتال کی حمایت میں وکلا نے بھی عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ کیا، ہڑتال کے باعث تمام کاروباری مراکز بند رہے جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ نہ ہونے کے برابر تھی جس کی وجہ سے مسافروں کو شدید مشکلات کاسامنا کرنا پڑا۔ پنوں عاقل میں فنکشنل لیگ اور سندھ بچاﺅ کمیٹی کی کال پر شٹر ڈاﺅن ہڑتال ،ٹائر نذر آتش کئے گئے۔بلوچستان میں بھی فنکشنل مسلم لیگ کی جانب سے یوم سیاہ منایا گیا اور احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں۔ جعفرآباد فنکشنل لیگ کے سینکڑوں کارکنوں نے بازﺅں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر صوبائی رہنما عبدالرزاق بنگلزئی کی قیادت میں فنکشنل لیگ آفس سے احتجاجی ریلی نکالی اور شہر کے مختلف راستوں سے مارچ کرتے ہوئے مرکزی چوک پر پہنچ کر دھرنا دیا جس کے باعث سندھ، بلوچستان کی ٹریفک جام ہو گئی۔ صحبت پور میں فنکشنل لیگ کے کارکنوں نے حاجی مراد علی کی قیادت میں احتجاجی ریلی نکالی اور ڈیرہ اللہ یار، صحبت پور روڈ پر دھرنا دیا گیا۔ اوستہ محمد میں بھی فنکشنل لیگ کے درجنوں کارکنوں نے ڈاکٹر گلزار احمد کھوسہ کی قیادت میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔ ڈیرہ مراد جمالی، گنداخہ، گنداواہ، چھتر، منجھو شوری، نوتال، بھنڈ شریف، مانجھی پور، پنہور سنھڑی، میہوپور اور دیگر چھوٹے بڑے شہروں میں بھی احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں اور مظاہرے کئے گئے۔ جعفرآباد میں مرکزی جلوس سے خطاب کرتے ہوئے فنکشنل لیگ کے صوبائی رہنماﺅں عبدالرزاق بنگلزئی، ڈاکٹر بشیر احمد کھوسہ، استاد محمد عثمان و دیگر نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی سندھ میں ایک اتحادی جماعت کو خوش کرنے کےلئے سندھ کی سرزمین کا سودہ کرنے پر مجبور ہو گئی۔