حکمرانوں نے ہر شعبہ میں کرپشن کی ‘ زرداری اربوں روپے واپس کریں ورنہ قوم خود نکلوالے گی : شہباز شریف

حکمرانوں نے ہر شعبہ میں کرپشن کی ‘ زرداری اربوں روپے واپس کریں ورنہ قوم خود نکلوالے گی : شہباز شریف

لاہور (خصوصی رپورٹر) وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ زرداری قوم کے لوٹے ہوئے اربوں روپے واپس کریں ورنہ قوم ان سے ملک کا لوٹا ہوا پیسہ خود نکلوا لے گی۔ سابقہ دور میں بھی پنجاب بنک کے 70 ارب روپے لوٹ لئے گئے اور ہماری حکومت نے لٹیروں کو دبئی سے واپس لا کر قوم کے اربوں روپے نکلوائے۔ کرپٹ حکمرانوں نے کھاد میں اربوں روپے کے ڈاکے ڈالے ہیں اور اسی طرح ہر شعبے میں کرپشن کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ الیکشن کے بعد لاہور کی طرح راولپنڈی میں بھی ریپڈبس ٹرانسپورٹ سسٹم بنایا جائے گا۔ پیر ودھائی موڑ انڈر پاس اور فلائی اوور ڈیڑھ ارب روپے کی لاگت سے آئندہ تین ماہ میں مکمل کیا جائے گا۔ وہ گذشتہ روز راولپنڈی کینٹ میں چوہڑ چوک کے توسیعی منصوبے کے افتتاح اور پیرودھائی موڑ انڈر پاس و فلائی اوور منصوبے کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد جلسہ عام سے خطاب کر رہے تھے۔ جلسہ میں راولپنڈی کنٹونمنٹ بورڈ کے سابق وائس چیئرمین حافظ حسین احمد نے پاکستان مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کا اعلان کیا۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کی قیادت میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے پنجاب میں ساڑھے چار سال میں اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں پر عملدرآمد کیا ہے، سڑکوں، فلائی اوورز، انڈر پاسز، ہسپتالوں، سکولوں اور کالجوں کی عمارتیں تعمیر کی گئی ہیں۔ ساڑھے چار سال کی شب و روز محنت اور دیانتداری سے ان منصوبوں پر عمل کیا گیا ہے اور اگر کوئی شخص ان منصوبوں میں ایک پائی کی کرپشن کی نشاندہی کر دے تو وہ اس کے ذمہ دار ہوں گے۔ آئندہ الیکشن میں نواز شریف کو وزیراعظم بنائیں اور اس ملک سے کرپٹ لوگوں، چوروں اور ٹھگوں کو بھگائیں۔ مسلم لیگ (ن) کی حکومت لاہور میں 30 ارب روپے سے ریپڈبس ٹرانسپورٹ سسٹم مکمل کر رہی ہے جبکہ سابقہ حکمرانوں نے اس منصوبے کی فزیبلٹی بنائی تھی اور اس منصوبے پر کرپشن کی غرض سے 200 ارب روپے سے زائد کا تخمینہ لگوایا گیا تھا۔ مسلم لیگ (ن )کی حکومت لاہور میں ترک بھائیوں کی معاونت سے 11 مہینے کی مختصر اور ریکارڈ مدت کے اندر ریپڈ بس ٹرانسپورٹ سسٹم مکمل کررہی ہے، حکمرانوں میں اگرہمت اور جرات ہوتی تو آج ملک میں اندھیرے نہ ہوتے۔ راولپنڈی میں 3 ارب روپے کی لاگت سے امراض قلب کا ہسپتال مکمل کیا گیا ہے جو جلد کام شروع کر دے گا جبکہ سوا ارب روپے کی لاگت سے چاندنی چوک فلائی اوور مکمل ہو چکا ہے۔ اس موقع پر ارکان قومی اسمبلی ملک ابرار احمد، محمد حنیف عباسی اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما سردار نسیم نے بھی خطاب کیا۔ علاوہ ازیں شہباز شریف نے کہا ہے کہ عوام کو صحت کی بہترین سہولیات کی فراہمی، شعبہ صحت کی کارکردگی بڑھانے اور میڈیکل ایجوکیشن کے فروغ پراربوں روپے خرچ کئے جارہے ہیں۔ راولپنڈی انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی اور بہاولپور میں 410 بستروں پر مشتمل ہسپتال جنوری 2013ءتک پوری طرح فنکشنل ہو جائیں گے۔ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال بہاولنگر کو اپ گریڈ کیاجائے گا جبکہ بھکر میں بھی جلد میڈیکل کالج کا سنگ بنیاد رکھا جائےگا۔ وہ ایوان وزیر اعلیٰ میں مختلف میگا ہیلتھ پراجیکٹس پر پیشرفت کا جائزہ لینے کےلئے منعقدہ اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ شہباز شریف نے کہا کہ شاہدرہ میں 310 بستروں پر مشتمل ہسپتال بھی بنایا جا رہا ہے جبکہ سرگودھا میں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال کی اپ گریڈیشن کا کام بھی تیزی سے جاری ہے۔ مفاد عامہ کے ان منصوبوں میں کسی بھی قسم کی تاخیر ناقابل برداشت ہے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ نئے ہسپتالوں کی تعمیر کے کام کی رفتار مزید تیز کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ راولپنڈی کے ہسپتال میں چوہے کے کاٹنے جیسے افسوسناک واقعہ کی شکایت آئندہ پنجاب کے کسی بھی ہسپتال سے نہیں آنی چاہئے ورنہ ذمہ داروں کوہرگز معاف نہیں کیا جائےگا۔ علاوہ ازیں شہباز شریف کی زیر صدارت گذشتہ روز میٹرو بس پراجیکٹ کے سکیورٹی انتظامات سے متعلق اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میٹرو بس پراجیکٹ پنجاب حکومت کا شاندار منصوبہ ہے جس کی تکمیل سے عوام کو اتنا ریلیف ملے گا کہ وہ عارض تکلیف بھول جائیں گے۔ میٹرو بس پراجیکٹ کے لئے فول پروف سکیورٹی پلان مرتب کیا جائے گا جس کے تحت مرکزی کنٹرول روم بنایا جائے گا جہاں سے روٹ پر ہونے والی ہر سرگرمی پر نظر رکھی جا سکے گی۔ وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ میٹرو بس روٹ کے ایلیویٹڈ سیکشن پر ریسکیو 1122 کے سنٹر بنانے کا جائزہ لیا جائے۔ ملک کی تاریخ کا منفرد منصوبہ میٹرو بس سروس عوام کے لئے ہے اور اس عظیم عوامی اثاثہ کی حفاظت ہم سب کی ذمہ داری ہے۔ نوائے وقت نیوز کے مطابق جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا ہے کہ حکمرانوں سے ایک ایک پائی وصول کریں گے۔ لوٹی ہوئی دولت واپس نہ لایا تو میرا نام شہباز شریف نہیں۔ بڑے میاں صاحب نے کہا ہے کہ ذرا دھیان سے بیان دیا کریں۔ آصف زرداری سے کہتا ہوں کہ عوام ملک کی لوٹی دولت واپس لینا جانتی ہے، پنجاب کے کونے کونے میں صدر زرداری کی کرپشن کا پردہ چاک کریں گے۔
لاہور (نوائے وقت رپورٹ) وزیراعلی شہباز شریف نے کہا ہے کہ ملک کا سب سے اہم مسئلہ لوڈ شیڈنگ ہے جس سے صنعتیں تباہ اور ہسپتال اندھیروں میں ڈوب گئے، معیشت کو کاری ضرب لگی، آئندہ انتخابات "Survival of Pakistan" کے سلوگن پر ہوں گے۔ مشرف آمریت میں محترمہ کے ساتھ نوازشریف نے چارٹر آف ڈیموکریسی پر دستخط کئے جس میں ماضی کی غلطیوں کا اعتراف اور آئدہ بہتر جمہوری ماحول فراہم کرنے کا کہا گیا۔ مینڈیٹ ملنے کے بعد ہم نے خلوص نیت سے عمل کیا لیکن جب محسوس کیا کہ آصف زرداری نے ماضی سے کوئی سبق نہیں سیکھا تو انہیں خدا حافظ کہہ دیا، یہ باتیں انہوں نے یونیورسٹی اور کالجز کی طالبات کے سامنے مسلم لیگ (ن) کا آئندہ الیکشن کے حوالے سے کیس پیش کرتے ہوئے کہیں۔ انہوں نے کہا کہ زرداری جب ججز کو بحال کرنے پر آمادہ نہ ہوئے تو ہم نے لانگ مارچ کیا۔ میرے خلاف ایک دھیلے کی بھی کرپشن کا ثبوت ہو تو عوام کا ہاتھ اور میرا گریبان ہو گا۔ آئندہ انتخابات میں زرداری کی پی پی سے اتحاد کرنا ایسے ہی ہے جیسے موت کے کنویں میں چھلانگ لگانا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ او لیول سسٹم پورے ملک میں ختم کر کے میٹریکولیشن کا نظام لایا جانا چاہئے۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان کو دیکھ کر نوجوانوں کی حوصلہ افزائی کا تاثر غلط ہے۔ آج دانش سکولوں کے بچے ایچی سن کو مات دیتے ہیں، دانش سکول غریب ترین علاقوں میں بنائے گئے۔ میٹرو پر رقم خرچ کرنے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ 1976ءکے بعد اب پہلی بار چار میڈیکل کالجز اور 4 خواتین یونیورسٹیاں بنی ہیں۔ اس سے پہلے کی حکومت کا میٹرو منصوبہ 230 ارب روپے کا تھا جس کی صرف فیزیبلٹی رپورٹ ایک ارب روپے میں تیار ہوئی۔ فیزیبلٹی رپورٹ بنانے والوں نے 40 کروڑ روپے غبن کئے۔ میں نے اسے دبئی سے گرفتار کروا کر رقم برآمد کروائی۔ میں نے پہلے دن سے اپنے اثاثے ڈکلیئر کئے ہیں اور ہر سال کرتا ہوں۔