ملک کے مختلف شہروں میں بجلی کی طویل اور غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ, احتجاج اور مظاہروں کا سلسلہ جاری۔ سحر اور افطار میں روزہ داروں کی مشکلات کم نہ ہو سکیں۔

خبریں ماخذ  |  اپنے نمائندہ سے
ملک کے مختلف شہروں میں بجلی کی طویل اور غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ, احتجاج اور مظاہروں کا سلسلہ جاری۔ سحر اور افطار میں روزہ داروں کی مشکلات کم نہ ہو سکیں۔

بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے خلاف پنجاب اور خیبر پختونخواہ سمیت مختلف شہروں میں احتجاج اور توڑ پھوڑ کا سلسلہ جاری ہے۔ لاہور میں مظاہرین نے لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجاً بند روڈ پرٹریفک جام کر دی جس سے گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں،مظاہرین کا کہنا تھا کہ ماہ رمضان میں لوڈشیڈنگ نے ان کا جینا دوبھر کر دیا ہے کہ لیکن حکومت کوئی ایکشن نہیں لے رہی۔ پشاور میں بجلی کی بندش کے خلاف مشتعل افراد  ترناب فارم کے مقام پر جی ٹی روڈ پر نکل آئے اورسڑک بلاک کردی۔ پیسکو حکام اور مظاہرین کے درمیان مذاکرات بھی ناکام ہوگئے۔ جس کے باعث جی ٹی روڈ پر دونوں اطراف ٹریفک کی لمبی قطاریں لگ گئیں اور عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ حافظ آباد میں بجلی کی گھنٹوں لوڈشیڈنگ سے تنگ شہریوں نے احتجاج کے دوران جی پی او پر حملہ کر کے توڑ پھوڑ کی مظاہرین نے حکومت کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔  گوجرانوالہ میں علی پور چٹھہ کے رہائشی بجلی کا مطالبہ کرنے کے لیے گھروں سے نکلے اور گوجرانوالہ روڈ بلاک کردی مظاہرین کا کہنا تھا کہ سحر اور افطار میں بجلی کی بندش سے انھیں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ چنیوٹ میں مشتعل افراد نے ٹائر جلا کر جھنگ چنیوٹ روڈ بلاک کردی۔ خوشاب میں نور پور تھل کے مقام پر بھی بجلی کے ستائے لوگ سڑک پر نکل آئے۔ کوہاٹ میں احتجاجی مظاہرین نے باچا خان چوک گھیرلیا اور ہنگو روڈ بلاک کردی۔