نشتر ہاسٹل سے 2ڈاکٹرز کی گرفتاری ، پی ایم اے اور ینگ ڈاکٹرز آمنے سامنے

نشتر ہاسٹل سے 2ڈاکٹرز کی گرفتاری ، پی ایم اے اور ینگ ڈاکٹرز آمنے سامنے

ملتان (وقائع نگار خصوصی) نشتر میڈیکل کالج انتظامیہ کی عدم توجہی کے باعث دو ڈاکٹروں کی تنظیمیں نشتر کالج ہاسٹل کے دو ڈاکٹروں کی گرفتاری کے معاملہ پر آمنے سامنے آگئی ہیں ۔ نشتر انتظامیہ کی طرف سے ڈاکٹروں کی گرفتاری کے بعد پیدا ہونے والی کشیدہ صورتحال کو 8 روز گزرنے کے باوجود حل نہیں کیا جاسکا ہے ۔ جس سے خدشہ پیدا ہورہا ہے کہ آنے والے دنوں میں پی ایم اے ملتان اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ملتان کے درمیان گزشتہ روز بھی نشتر کینٹین پر ہونے والے دونوں تنظیموں کے علیحدہ علیحدہ اجلاسوں میں ایک گروپ کے ڈاکٹروں نے دوسرے گروپ کے ڈاکٹروں کے خلاف مردہ باد کے نعرے لگاے اور ڈاکٹر طارق جمیل اور ڈاکٹر شاہد راﺅ کو تنقید کا نشانہ بنایا ۔ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پنجاب کے چیئر مین ڈاکٹر مظہر چوہدری کے مطابق اگر نشتر انتظامیہ نے نشتر ہاسٹل سے دو بے گناہ ڈاکٹروں کی گرفتاری میں ملوث ڈاکٹروں کے خلاف کارروائی نہ کی اور نشتر کالج ہاسٹلز کے وارڈن ، اسسٹنٹ وارڈن کی تعیناتیاں میرٹ پر نہ کی گئیں تو احتجاج کا دائرہ کار پنجاب بھر میں پھیلا دیا جائے گا ۔ ینگ ڈاکٹرز کی طرف سے گزشتہ روز نکالی گئی ریلی میں ڈاکٹر جہانگیر ریاض ، ڈاکٹر حسن چاون ، ڈاکٹر کبیرا، ڈاکٹر فیصل کے علاوہ دیگر ڈاکٹروں نے شرکت کی ۔