بھارت سے بجلی خریدنے کا معاہدہ اسکی آبی جارحیت کو تسلیم کرنا ہے: ظہور الحسن ڈاہر

بھارت سے بجلی خریدنے کا معاہدہ اسکی آبی جارحیت کو تسلیم کرنا ہے: ظہور الحسن ڈاہر

ملتان (رخشندہ نیئر سے) سندھ طاس واٹر کونسل کے چیئرمین، ورلڈ واٹر اسمبلی کے چیف کوآرڈینیٹر حافظ ظہور الحسن ڈاہر نے کہا ہے کہ بھارت سے بجلی درآمد کرنے کا معاہدہ دراصل بھارتی آبی جارحیت کو تسلیم کرنے کام عملی ثبوت ہو گا۔ بھارت مدت سے پاکستان کو یہ تجویز دے رہا ہے کہ دریائے چناب‘ جہلم اور سندھ پر بھارتی حدود میں 10 ڈیم بنانے کی اجازت دے دی جائے۔ بھارت انتہائی سستے داموں پاکستان کو پاور جنریٹ کرائے گا۔ نوائے وقت سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ حقیقت عیاں ہے کہ ہماری کرپٹ اسٹیبلشمنٹ اندر خانے ڈالروں کی چمک کے لالچ میں بھارت کو طویل المدتی ڈیم بنانے کا موقع فراہم کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ قوم کو یہ باور کرانا چاہ رہا ہوں ڈیموں کی تعمیر کے بعد دریا¶ں کا تمام تر کنٹرول بھارت کے پاس چلا جائے گا اور ہماری کرپٹ اسٹیبلشمنٹ نے ماضی کی حکومتوں کو اس قومی مسئلے میں ہاتھ ڈالنے سے دور رکھا۔ مگر اب میاں نواز شریف جو منجھے ہوئے سیاست دان ہیں قوم و ملک کی بھلائی کے لئے اس اہم کام میں ہاتھ ڈال کر قوم و ملک کی تقدیر کو سنہری حروف سے لکھ دیں۔